Bewafa Poetry in Urdu

محبتیں چھن بھی جایا کرتی ہیں

شرک کوئی چھوٹا گناہ تو نہیں 

Mohabatin cheen be jaya karti hain

sherak koi chota ghuna to nahi


○●○●○●○●○●○●○●

کسی ناقدرے سے محبت کرنا ایسا ہی ہے

جیسے آپ انہیں سونے کے برتن میں آب حیات پیش کریں اور وه اسے هونٹوں سے لگانے کی بجاۓ اس سے اپنے پاؤں دھولے

Kisi na qadray say Mohabat karna asa he ha

jasay ap inay sonay kay bartan ma aaby hayat paisj karain or wo usy hanton say laganay ki bajay is say apny paon dhoo lay

 

○●○●○●○●○●○●○●

وہ مجھ کو ٹوٹ کے چاہے گا چھوڑ جائے گا 

مجھے خبر تھی اسے یہ ہنر بھی آتا ہے



wo mujh ko toot kar chahay ga chir jay ga

mujhay khabar thi usy ya hunar be aata hay

 

○●○●○●○●○●○●○●

نا جانے کیوں آتے ہیں زندگی میں وہ لوگ

وفائیں کر نہیں سکتے باتیں ہزار کرتے ہیں

Na janay kuy aatay hain zindagi ma wo log

wafain kar nahi saktay batain hazar karty hain

 

○●○●○●○●○●○●○●

اتنا بھی ہم سے ناراض نہ ہوا کر

بد نصیب ضرور ہیں پر بے وفا نہیں

itna be ham say nazar na hova kar

bad naseeb zaroor hain par baywafa nahi

 

○●○●○●○●○●○●○●

چھوڑ کر نہیں گیا مجھے 

کہا نا توڑ کر گیا ہے

chor kar nahi gaya mujhy

kahan naa toor kay gaya hay

○●○●○●○●○●○●○●

مجھ سے بچھڑا ہوا شخص لباس تھا میرا

ارے رقیبوں کو مبارک ہو اترن ہماری 

mujhay say bichara hova sakhs labas tha mera

Aray

raqeebon ko mubarak ho utran hamari

 

○●○●○●○●○●○●○●

ہم اسے یاد بہت آئیں گئے 

جب اسے بھی کوئی ٹھکرائے گا

ham usy yad bohat aayn gayin

jab usy be koi thukray gaa

 

○●○●○●○●○●○●○●

چھوڑ دو وہ بہانے جو تم کرتے ہو سنگدل 

مجھے بھی پتا ہے مجبوریاں تبھی آتی ہیں جب دل بھر جاتا ہے

chor do bahanay jo tum karty ho

singdill

mujhay be oata hay mujboriyan tabi aati hain jab dill bhar jata hay

 

○●○●○●○●○●○●○●

اس وقت تیرے دل میں بہت درد اٹھے گا 

جب بچھڑ کر مجھ سے تجھے میرے ہم نام ملیں گے

us waqt taray dill ma bohat dar uthay gaa

jab bichar kar mujhy say tujhay maray ham nam milain gayn

 

○●○●○●○●○●○●○●

اس کی آواز میری بھوک مٹایا کرتی تھی 

میرا رزق بھی مجھ سے چھین لیا گیا

us ki awaz mari bhook metaya karti thi

mera rizq be mujhay say cheen leya gaya

 

○●○●○●○●○●○●○●

میں تیرے بعد کوئی تیرے جیسا ڈھونڈتا ہوں

جو بےوفائی بھی کریں بےوفا نہ لگے 

ma taray bad koi taray jesa dhondta hoon

jo baywafai be karain baywafa naa lagay

 

○●○●○●○●○●○●○●

کہیں کسی سے بھی ذکر جدائی مت کرنا

ان آنسوؤں روشنائی مت کرنا 

جہاں تمہارا دل نہ لگے وہیں بچھڑ جانا 

مگر خدا کے لیے بےوفائی مت کرنا 

kahi kisi say be zijar judai mat karna

in ansoo rosnaii mat karna

jahan tumra dill na lagay wohin bichar jana

magar khuda kay keya baywafai mat karna

 

○●○●○●○●○●○●○●

بہت مان تھا جن پر 

بڑے بے ایمان نکلے وہ

bohat man tha jin par

Baray bay eman niklay woo

 

○●○●○●○●○●○●○●

اے دل تنہائی میں رہنے کا عادی ہو جا

بدل گئے ہیں وہ لوگ جو صبح شام یاد کیا کرتے تھے

Aay dill tanhai ma rehnay ka aadi ho jaa

badal kay hain wo log jo shuba sham yad keya karty thay

 

○●○●○●○●○●○●○●

یہ غم نہیں کہ وہ مجھ سے وفا نہیں کرتا

ستم تو یہ ہے کہ کہتا ہے جا نہیں کرتا



ya gham nahi kay wo mujh say wafa nahi krta

sitam to ya hay kay kehta hay ja nahi karty

 

○●○●○●○●○●○●○●

یاد کرو گے ایک دن مجھے یہ سوچ کر 

کیوں نہیں قدر کی میں نے اس کے پیار کی

yad karo hay ak din mujhy ya soch kar

kuy nahi qadar ki ma nay us kay pyar ki

 

○●○●○●○●○●○●○●

ہم شجر تھے اور شجر ہی رہے 

وہ بدلتا رہا موسموں کی طرح 

ham sajar thay or sajar he rahay

wo badal raha mosamon ki tarah

 

○●○●○●○●○●○●○●

میں نے زہر بھی زخموں پر لگا کر دیکھا ہے

اتنی آہیں نہیں نکلتی جتنی تیری بے رخی سے نکلتی ہیں

ma nay zahar be zakhmo par laga kar dakha hay

itni aahain nahi nikalti jitna tarai bayrukhi say nikalti hain

 

○●○●○●○●○●○●○●

ہنسی آجاتی ہے یہ سوچ کر کہ 

ہم بھی تجھ جیسے کے لیے روۓ تھے

hansi aa jati ha ya soch kar kay

ham be tujh jesay kay keya roy thay

 

○●○●○●○●○●○●○●

پائیدار خلوص میں دشواریاں نہ کر

چاہت نہیں تو ہم سے اداکاریاں نہ کر

Paydar khaloos ma dushwariyn na kar

chahat nahi to ham say adakariyn naa kar

 

○●○●○●○●○●○●○●

میری زندگی میں ایک شخص اتنا اہم ہو گیا

اسے ہم سے محبت ہے ہمیں یہ وہم ہو گیا

mari zindagi ma ak sakhs itna eham ho gaya

usy ham say Mohabat hay hamay ya weham ho gaya

 

○●○●○●○●○●○●○●

مرد کی محبت جب حد سے تجاوز کر جائے 

تو عورت اکثر بےوفا ہو جاتی ہے

mard ki Mohabat jab had say tajawz kar jay

to aurat aksar baywafa ho jati hay

 

○●○●○●○●○●○●○

دل تو بہت بار ٹوٹ چکا ہے تیری بے وفائی پر

دعا کرو اس بار سانسیں ٹوٹے 

dill to bohat bar tot chuka hay tari bat wafai par

See also  Badnam Poetry in Urdu

dua karo is bar sansain tootay

 

○●○●○●○●○●○●○●

بچھڑنے کا وہ پہلے سے طے کر چکا تھا 

اسے میری طرف سے بدگمانی چاہیے تھی

bichranay ka wo pehlay say tay kar chuka tha

 

ysy mari taraf say badgumani chay thi

 

○●○●○●○●○●○●○●

مجھے چھوڑنے والے

میرا کچھ تو چھوڑ جاتے

mujhu chornay walay

mera kuch to chor jatay

 

○●○●○●○●○●○●○●

کتنے آرام سے چھوڑ دیا تم نے بات کرنا 

جیسے صدیوں سے تم پہ بوجھ تھے ہم

kitnay aram say chor deya tum nay bat karna

jasay sadiyon say tum pay bohh thay ham

 

○●○●○●○●○●○●○●

جب لوگ طے کر لیتے ہیں کہ اب تعلق نہیں رکھنا 

تو وہ پتھر کے ہو جاتے ہیں اور پتھر کے سامنے جتنا بھی رو لو 

گڑ گڑا لو معافیاں مانگ لو وہ کہاں سنتے ہیں

jab log tay kar katay hain kay ab talak nahi rakhna

to wo pathar kay ho jatay hain or pathar kay samnay jina b roo loo

girgiraa li mafiyan mang lo wo kahan sunta hain

 

○●○●○●○●○●○●○●

اے چراغ جلنا ہے تو ہٹ کر جل میرے مزار سے

کیونکہ میں پہلے سے جلا ہوا ہوں ایک بیوفا کے پیار سے

aay Charag jalna hay to hat kar jal maray mezar say

kuy kay

ma prhlay say jala hova hon ak baywafa kay pyar say

 

○●○●○●○●○●○●○●

ابھی سکون میں ہے وہ کسی اور کا ہو کر

آگ تو تب لگے گی جب ہم کسی اور کے ہوں گے

abi sakoon ma hay wo kusi or ka ho kar

aagh to tab lagy gi jab ham kisi ir kay hon gay

 

○●○●○●○●○●○●○●

پائیدار خلوص میں دشواریاں نہ کر

چاہت نہیں تو ہم سے اداکاریاں نہ کر.5



baydar khaloos ma dushwariyn na kar

chahat nahi to ham say adakaraiyn naa karr

 

○●○●○●○●○●○●○●

میری زندگی میں ایک شخص اتنا اہم ہو گیا

اسے ہم سے محبت ہے ہمیں یہ وہم ہو گیا

mari zindagi ma Ak Shaks itna eham ho gaya

Usy ham say Mohabat hay hamay ya waham ho gaya

 

○●○●○●○●○●○●○●

مرد کی محبت جب حد سے تجاوز کر جائے 

تو عورت اکثر بےوفا ہو جاتی ہے

mard ki Mohabat jab had say tajawaz kar jay

to aurat aksar baywafa ho jati hay

 

○●○●○●○●○●○●○●

دل تو بہت بار ٹوٹ چکا ہے تیری بے وفائی پر

دعا کرو اس بار سانسیں ٹوٹے 

Dill too bohat bar tot chuka hay tari bay wafai par

dua karo is bar sansain tootay

 

○●○●○●○●○●○●○●

بچھڑنے کا وہ پہلے سے طے کر چکا تھا 

اسے میری طرف سے بدگمانی چاہیے تھی

bichranay ka wo pehlay say tay kar chuka tha

ysy mari taraf say badgumani chay thi

 

○●○●○●○●○●○●○●

مجھے چھوڑنے والے

میرا کچھ تو چھوڑ جاتے

mujy chornay walay

mera kuch to chor jatay

 

○●○●○●○●○●○●○●

کتنے آرام سے چھوڑ دیا تم نے بات کرنا 

جیسے صدیوں سے تم پہ بوجھ تھے ہم

kitnay aram say chir deya tum nay bat karna

jasay sadiyon say tum pay bojh thay ham

 

○●○●○●○●○●○●○●

جب لوگ طے کر لیتے ہیں کہ اب تعلق نہیں رکھنا 

تو وہ پتھر کے ہو جاتے ہیں اور پتھر کے سامنے جتنا بھی رو لو 

گڑ گڑا لو معافیاں مانگ لو وہ کہاں سنتے ہیں

 

jab log tay kar katay hain kay ab talak nahi rakhna

to wo pathar kay ho jatay hain or pathar kay samnay jina b roo loo

girgiraa li mafiyan mang lo wo kahan sunta hain

○●○●○●○●○●○●○●

اے چراغ جلنا ہے تو ہٹ کر جل میرے مزار سے

کیونکہ میں پہلے سے جلا ہوا ہوں ایک بیوفا کے پیار سے

 

aay Charag jalna hay to hat kar jal maray mezar say

kuy kay

ma prhlay say jala hova hon ak baywafa kay pyar say

○●○●○●○●○●○●○●

ابھی سکون میں ہے وہ کسی اور کا ہو کر

آگ تو تب لگے گی جب ہم کسی اور کے ہوں گے

Abi sakoon ma hay wo kisi or ka ho kar

aagh to tab lagay gi jab ham kusi or kay hon gay

○●○●○●○●○●○●○●

تیری محبت بھی کراۓ کے گھر کی طرح تھی 

کتنا بھی سجایا پر میری نہ ہوئی

tari Mohabat b karay kay ghar ki tarah thi

kitna b sajaya par mari na hoie

 

○●○●○●○●○●○●○●

تجھ سے دور جانے کا کوئی ارادہ نہ تھا

پر کرتے ہم کیا جب تو ہی ہمارا نہ تھا

tujh say dour janay ka koi irada naa tha

par karty ham jya jab tu he hamara naa tha

 

○●○●○●○●○●○●○●

اتنی وفائیں بھی نہ کرنا کبھی کسی شخص سے

دل کی گہرائی سے چاہا جائے تو لوگ مغرور ہو جاتے ہیں

itni wafain be na karna kabi kisi sakhs say

dill ki gehrai say chaha jay to lig magroir ho jatay hain

 

○●○●○●○●○●○●○●

مانا کہ بہت خوش ہو تم اس جدائی سے 

مگر اللہ نہ کرے کہ تمہیں کوئی تمہارے جیسا مل جائے

mana kay bohat khush ho tum is judai say

Magar Allah na karay kay tumay koi tumaray jesa mil jay

 

○●○●○●○●○●○●○●

کبھی اس کا ہوا کبھی اس کا ہوا کبھی میرا ہوا 



اس نے حسن گنوا دیا تجارت کرتے کرتے

kabi us ka hova kabi  is ka hova kabi mera hova

is nay husn gawa deya tajarat karty karty

 

○●○●○●○●○●○●○●

تیرے بیوفا ہونے کی شدت نے رولا دیا 

ورنہ ہم تو رونے والوں کو فنکار سمجھتے تھے

See also  Beautiful poetry in Urdu

taray baywafa honay ki shidat nay rula deya

warna ham to ronay waly ko fankar samajhtay thay

 

○●○●○●○●○●○●○●

‏میں خود میں برائیاں ڈھونڈتا ہی رہ گیا 

اس نے جب کہا تھا تو میرے لائق نہیں

ma khud ma burayin dhondta he rah gaya

us nay jab kaha tha tu maray laiq nahi

 

○●○●○●○●○●○●○●

جب اس نے کہا بھول جانا مجھے 

تب پہلی بار مجھے اپنے ذہین ہونے پر افسوس ہوا

jab us nay kaha bhool jana mujhy

tab pehlu bar mujh apnay sehan honay par afsos hova

 

○●○●○●○●○●○●○●

اِتنی شدت سے نہ کر ترک تعلق کا سوال

یہ نہ ہو ہم سے تیری بات نہ ٹالی جائے

itni shidat say na kar tarak e talaq ka sawal

ya na ho ham say tari bat na talii jay

 

○●○●○●○●○●○●○●

صبح کی روشنی کی طرح ڈھلتے دن کی طرح

اکثر لوگ بدلتے ہیں جدا ہوتے ہیں

Shuba ki roshni ki tarah dhaltay din ki tarah

aksar log badaltay hain juda hotay hain

 

○●○●○●○●○●○●○●

انسان دو وجہ سے بدل جاتا ہے

کوئی خاص اس کی زندگی میں آجاۓ 

یا کوئی بہت خاص اس کی زندگی سے چلا جائے

insan do waja say badal jata hay

koi khas is ki zindagi ma aa jay

ya koi bohat khass us ki zindagi say chala jay

 

○●○●○●○●○●○●○●

بہت کمزور ہے وہ مرد جو عورت کے دل میں 

اپنی محبت پیدا کر کے اسے چھوڑ دے

bohat kamzoor hay wo mard jo aurat kay dill ma

apni Mohabat peda kar kay usy chor day

 

○●○●○●○●○●○●○●

محبت تھی اک ایسے شخص سے 

جس کے چاہنے والے ہزاروں تھے

Mohabat thi ak asy sakhs say

jis kay chahnay walay hazaron thay

 

○●○●○●○●○●○●○●

ہزاروں نے دیں دلیل کے بے وفا ہے تو 

پر دل نہ مانا میری محبت کی تجھ سے انتہا تھی یہ 

hazaron nay dain daleel kay bay wafa hay tu

par dill na mana marai Mohabat ki tujh say inteha thi ya

 

○●○●○●○●○●○●○●

اور آخر میں ہم سب کسی نہ کسی کی زندگی کا بھولا ہوا کل بن کر رہ جاتے ہیں

or aakhir ma ham sab kisi naa kis ki zindagi ka bhola hova kal ban kar rah jatay hain

 

○●○●○●○●○●○●○●

تعلقات کو بس اس مقام تک رکھیے 

کسی کو چھوڑ نا پڑ جائے تو مرے نہ کوئی

taluqat ko bass is muqam tak rakheya

kisi ko chorna par jay to marry na koii

 

○●○●○●○●○●○●○●

جب لہجے بدل جائیں تو وضاحتیں کیسی

نئی میسر ہو جائیں تو پرانی چاہتیں کیسی

jab lehjay badal jain to wazahatin kiasi

neaii muyasir ho jain to purani chahtain kasii

 

○●○●○●○●○●○●○●

سمجھ سکتے ہو اذیت میری 

میرے سامنے ہی بدل گئی محبت میری 

samjh saktay ho aziyat mari

maray samnay he badal gai Mohabat mari

 

○●○●○●○●○●○●○●

سانس لو بھی تو اس کی مہک آتی ہے

اس نے ٹھکرایا ہے مجھے اتنے قریب آنے کے بعد

sans lo be to us ki mahak aati hay

us nay thukraya hay mujhay itnay qareeb aany kay bad

 

○●○●○●○●○●○●○●

مت لکھ یوں اپنے خون سے ہر بار تحریر ان کے لیے 

جو تیرا خلوص نہ پہچان سکے وہ تیرا خون کیا پہچانے گے

mat likh yun apnay khoon say har bar tehreer in kay leya

jo tera khaloos na pehchan sakay wo tera khoon kya oehchany gaa

 

○●○●○●○●○●○●○●

اتنی چاہت کے بعد بھی تجھے احساس نہ ہوا

ذرا دیکھ تو لے دل کی جگہ پتھر تو نہیں.

itnii chahat kay bad be tujhay ehsas na hova

zara dakh to lay dill ki jhaga pathar to nahii

 

○●○●○●○●○●○●○●

نا جانے کس کے مقدر میں لکھے ہو تم مگر

سچ تو یہ ہے کہ امید وار ہم آج بھی ہیں 

na janay kis kay muqadar ma likhay ho tum magar

 

aach to ya hay k umeedwar ham aj be hain

 

○●○●○●○●○●○●○●

استخارہ کیا ہے آج میں نے اس کے نام کا 

محبت میں وفادار ہے وہ پر کسی اور کے لیے

Estekhara kya ha aj ma nay ys kay nam ka

Mohabat ma wafadar hay wo par kisi or kay leya

 

○●○●○●○●○●○●○●

نہیں چھوڑ سکتے ہم دوسروں کے ہاتھ میں تم کو

لوٹ آو کہ ہم ابھی تک تمہارے ہیں

nahi chor saktau ham dosron kay hath ma tum ko

lout aayon k ham abi tak tumaray hain

 

○●○●○●○●○●○●○●

اس نے کہا یہ ساتھ قیامت تک کا ہے

پھر کچھ دنوں کے بعد قیامت ہی آگئی

us nay kaha ya sath kayamat tak kahan hay

phr kuch dino kay bad kayamat he aa gai

 

○●○●○●○●○●○●○●

وفا کی تلاش تو بےوفائوں کو بھی ہوتی ہے 

ہم نے تو دنیا ہی چھوڑ دی کسی کی وفا کی خاطر.

Wafa ki talash to baywafaon ko be hoti hay

ham nay to duniya he chor di kisi ki wafa ki khatir

 

○●○●○●○●○●○●○●

چھوڑ تو دیا مجھے پر کبھی یہ سوچا تم نے

اب کبھی جھوٹ بولا تو قسمیں کس کی کھاو گے

chor to deya mujhy par kabi ya socha tum nay

ab kabi jhot bila to qasmain kis ki khoy gay

 

○●○●○●○●○●○●○●

محبت سیکھا کر جدا ہو گیا

نہ سوچا نہ سمجھا خفا ہوگیا

کس کس کو ہم اپنا کہیں

جو اپنا تھا وہی بے وفا ہو گیا

Mohabat sekha kar juda ho gaya

na socha na samjha khafa ho gaya

kis kis ko ham apna khain

See also  Punjabi shayri

jo apna tha wohi baywafa ho gaya

 

○●○●○●○●○●○●○●

کچھ لوگ ہماری قدر اس لیے بھی نہیں کرتے 

کیونکہ ہم لوگ انہیں چاہنے میں انتہا کر دیتے ہیں.

kuch log hamari qadra is keya be nahi karty

kuy kay

ham log inay chahnay ma inteha kardatay hain

 

○●○●○●○●○●○●○●

ہمیں ڈھونڈنے کی کوشش اب نہ کیا کر 

تو نے راستہ بدل دیا ہم نے منزل

hamain dhondnay ma koshish ab na keya kar

tu nay rastay badal deyan ham nay manzil

 

○●○●○●○●○●○●○●

آج گزرے جو تیرے شہر سے بہت رونا آیا 

کچھ بھی تو نہیں بدلہ وہاں اِک تیرے سوا



aj guzray jo taray seha say bohat rona aya

kuch he to nahi badla wahan ak taray sawa

 

○●○●○●○●○●○●○●

جن کا من بھر جاتا ہے نا 

ان کا بات کرنے کا طریقہ بھی بدل جاتا ہے

ji kay man bhar jata hay naa

us ka bat karny ka tareeka be badal jata hay

○●○●○●○●○●○●○●

ہیں نہ مجھے غلط فہمیاں؟ 

تجھے جب بھی لکھا اپنا لکھا.

hain naa mujh ma gakat fahmiyab

tujhay jab be kikha apna likha

○●○●○●○●○●○●○●

سمندر بھی تیری طرح مطلبی نکلا

جان لے کر لہروں سے کہتا ہے

لاش کنارے پر لگا دو

samundat be tari tarah matlabi nikla

janlay kar lahro say kehta hay

lashh kinaray par laga doo

 

○●○●○●○●○●○●○●

دل میں اتر کر آنکھوں سے بہہ گیا 

تیرا غم بھی تیری طرح بےوفا نکلا 

dill ma utar kar ankhon say beh gaya

tera gham be tari tarah baywafa nikla

 

○●○●○●○●○●○●○●

آج اس نے سلام بھیجا ہے

پھر کسی سے بگڑ گئی ہوگی

aj us nay salam bhaja hay

phir kisi say bigar gai ho ge

○●○●○●○●○●○●○●

بعد مرنے کے میری قبر پہ آے دعا مانگنے 

عمر بھر جس نے میرے مرنے کی دعائیں مانگیں 

bad marnay kay mari  qabar pay ayn dua mangany

umar bhar jis nay maray marnay ki duain mangin

 

○●○●○●○●○●○●○●

عید کا تیسرا دن ان کو مبارک 

جنہوں نے کسی تیسرے کے لیے ہمیں چھوڑا

Eid ka tersa din un ko mubarak

jino nay kusi teseay kay leya hamay chora

○●○●○●○●○●○●○●

میں بس سہارا تھا 

کنارہ کوئی اور تھا اس کا

ma bass sahara tha

kinara koi or tha us ka

 

○●○●○●○●○●○●○●

ﺗﺠﮭﮯ ﭼﮭﻮﮌﻭﮞ ﺗﻮ ﻣﺮ ﻧﮧ ﺟﺎؤﮞ

ﮐﭽﮫ ﺍﺱ ﻃﺮﺡ ﮐﮯ ﺗﮭﮯ ﻧﺎ ﻭﻋﺪﮮ ﺗﯿﺮﮮ؟

tujhay choron to mar na joyn

kuch is tarah kay thay naa waday taray?

 

○●○●○●○●○●○●○●

کمال کا طعنہ دیا آج دل نے

اگر تیرا کوئی ہے تو کدھر ہے

kamal katana deya aj dill nay

agar tera koi hay to kidr hay

 

○●○●○●○●○●○●○●

بچھڑنے کا وہ پہلے سے تھیہ کر چکا تھا 

اسے میری طرف سے بدگمانی چاہیے تھی

bichrany ka wo oehly say tay kar chuka tha

usy mari taraf say badgumani chaye thi

 

○●○●○●○●○●○●○●

سب کچھ ملا زندگی میں سوائے تیری وفا کے 

تم بے وفا تھے اور ہم تم سے ہی وفا مانگتے رہے 

sab kuch mila zindagi ma saway tari wafa kay

tum baywafa thay or ham tum say he wafa mangaty rahy

 

○●○●○●○●○●○●○●

تمہیں محبت کہاں تھی بس عادت تھی

ورنہ ہمارا پل بھر کا بچھڑنا تمہارے لیے عذاب ہوتا

tumay Mohabat kahan thi bas adat thii

 

warna hamara pal bhar ka becharna tumray leya azab hota

 

○●○●○●○●○●○●○●

کاش ہم جان جاتے کہ تم یوں بھلا دو گے

قسم لے لو تعلق جوڑنے سے پہلے ہم ہاتھ جوڑ لیتے

Kash ham jan jatay kay tum youn bhula do gay

qasam lay lo talq jornay say leglay ham bath jor latay

 

○●○●○●○●○●○●○●

جب ملو کسی سے تو ذرا دور کی یاری رکھنا



جان لیوا ہوتے ہیں اکثر سینے سے لگانے والے

jab milo kisi say to zara dour ki yaro rakhna

jan lewa hotay hain aksr seenay say lagany waly

 

○●○●○●○●○●○●○●

نصیب میرا کیوں مجھ سے خفا ہو جاتا ہے

اپنا جس کو بھی مانو بے وفا ہو جاتا ہے

naseeb mera kuy mujh say khafa ho jata hay

apna jis ko be mano wo baywafa ho jata ha

○●○●○●○●○●○●○●

اس نے بہانے سے ایک ہاتھ چھڑایا 

میں نے احتیاط سے دوسرا بھی چھوڑ دیا

us nay bahanay say ak hath churaya

many ehteyat say dosra be chor deya

 

○●○●○●○●○●○●○●

مجھے ایک پل میں برباد کر گیا وہ شخص 

جو میری ہجکی پر بھی تڑپ اٹھتا تھا

mujhay ak pal ma barbad kar gaya wo sakhs

jo mari hajki par b tarap uthta tha

 

○●○●○●○●○●○●○●

ہر کسی کے بس کی بات نہیں ہوتی

کسی ایک کے لیے وفادار ہونا 

har kisi kay bass ki bat nahi hoti

kisi ak kay leya wafadr hona

 

○●○●○●○●○●○●○●

ایک منفرد طریقہ سے مسترد کیا گیا مجھے 

آپ بہت اچھے ہیں پر میں آپ کے قابل نہیں

ak munfarid tarekay say mustard keya gaya mujhy

ap bohat achy hain par ma apkay qabil nahi

 

○●○●○●○●○●○●○●

ہر وہ انسان 



دو ٹکے کا ہی ہے 

جو کسی کے دل میں جگہ بنانے کے بعد بھی 

اس سے بہتر کی تلاش رکھتا ہے

har wo insan  do takay ga hay

jo kisi kay dill ma jhaga banay kay bad

us say behtar ki talash rakhta hay

 

○●○●○●○●○●○●○●