Dhoka Poetry in Urdu

ڈر تو منافقوں سے لگتا ہے
دشمن تو میں نے ہزاروں پال رکھے ہیں

dar tu munfiqoo sy lgta hai

dushmn tu main ny hazaro pal rakhy hain


مکھن لگانے والوں کے ہاتھوں میں ہمیشہ چھری ہوتی ہے

makhan lgany waloo ky hath ma hamesha churi huti hai


پھر سے اک بار دل کو توڑ میرے
تجھ پہ کچھ اعتبار باقى ہے

phir sy ek bar dil ko tor mery

tujh py kuch  Aytebar baki hai


سب کے اوپر یقین کر کے دیکھ لیا
سب بڑے پیار سے دھوکہ دیتے ہیں

sb ky upr yaqeen kar ky dekh liya

sb bary pyar sy dhukaa dety hai


کم ظرف کو جب اپنے سر پر بٹھاؤ تو وه اپنا ظرف ضرور دکھاتا ہے

kam zarf koo jab apny sir py bethaoo tu woo apnaa zarf zaror dekhata hai


سارے تعلق نبھا رہے ہو
پاگل ہو یا بنا رہے ہو؟

sary taluq nibhaa rahy hu

pagl hu yaa  bnaa rhy hu


ہم نے چھوڑ دیئے وہ لوگ
جنہیں ضرورت تھی پر قدر نہیں

hum ny choor diya wo log

jinhy zarorat thii par qadar nahi


اے دل نئے زخموں کے لیے تیار ہو جا
کچھ لوگ بڑے ادب سے پیش آ رہے ہیں

ay dil nay zakhmoo ky liya tyar hu jaa

kuch log bart adab sy pash  a rhy hain


آج کل ضرورت طے کرتی ہے

 کہ لہجہ کتنی دیر میٹھا رکھنا ے

ajkl zarorat teh karti  hai

ky lehjaa kitni der metha rkhnaa haii


 

میں نے کردار کی عظمت کو گرنے نہیں دیا
دھوکے تو بہت کھائے مگر دھوکہ نہیں دیا

Maine kirdaar ki azmat ko girne nai dia

Dhoke to bht khaaye magar dhoka nahi dia

○●○●○●○●○●○●○●

بے رحم ہوتا ہے
یہ اہم ہونے کا وہم

Be raham hota hai

We ahem hone ka weham

○●○●○●○●○●○●○●

غرض کی دوستی تھی مطلب کا زمانہ تھا
دل میں دشمنی تھی دوستی تو بہانہ تھا

Garz ki dosti thi matlab ka zamana tha

dil main dushmani thi dosti to bahana tha

○●○●○●○●○●○●○●

مطلب کی دنیا ہے فریب کا زمانہ ہے

دلوں میں نفرت ہے منہ پہ یارانہ ہے

Matlab ki dunya hai faraib ka zamana hai

Dilooon m nafrat hai  muu pe yarana hai

○●○●○●○●○●○●○●

زہر دینے کے بعد آپ امرت پلائیں
کہ شہد کھلائیں نتیجہ موت ہی ہے

Zehar dene k baad ap amrit pilayain

Ke shehad khilayaib natija mot hi hai

○●○●○●○●○●○●○●

برباد کر دیتا ہے مرشد
دوغلا یار اور جھوٹا پیار

Barbad kar deta hau murshad 

Dogla yaar or jhoota pyaar

○●○●○●○●○●○●○●

جھوٹ کے درختوں پر اعتبار کی چڑیا لوٹ کے نہیں آتی

Jhoot ke darakhto par aitbaar ki chirya lot kar nahi aati

○●○●○●○●○●○●○●

کچھ لوگ بھروسے کے لیے روتے ہیں اور کچھ لوگ بھروسہ کر کے روتے ہیں

Kch log bharose k liye rote hain or kxh log bharosa  kar ke rote hain 

○●○●○●○●○●○●○●

جن پر ہوتا ہے بہت زیادہ بھروسہ دل کو
وقت پڑنے پر وہی زہر پلا دیتے ہیں

Jin par hota hai bht zayada bharosa dil ko

Wakt parne par woi zehar pila dete hain

○●○●○●○●○●○●○●

آج کل پیار اندھا کم
گندا زیادہ ہے

Aj kal pyar andha kam 

Ganda zyada hai

○●○●○●○●○●○●○●

تم اعتماد کی بات کرتے ہو
یہاں آنکھوں دیکھا غلط نکل آتا ہے

Tum aitmaad ki baat krte ho

Yahann ankhoon daikha galat nikal aata hai 

○●○●○●○●○●○●○●

کوئی نہیں بنتا یہاں کسی کا بھی
مطلب نکلتے ہی لوگ پرایا کر دیتے ہیں

Koi nai banta yahan ksii ka bhi 

Matlab nikalte hi log paraya kar dete hain 

○●○●○●○●○●○●○●

فریبی ﮐﺘﻨﮯ ﭼﮩﺮﮮ ﺍﭨﮭﺎﺋﮯ ﭘﮭﺮتا ہوں

ﮐﺐ ﮐﺲ ﺳﮯ ﮐﯿﺴﮯ ﻣﻠﻨﺎ ﭘﮍ ﺟﺎﻧﮯ 

Farebi kitne chehre uthaye phirta hu

Kab kis se kese milna par jaaye 

○●○●○●○●○●○●○●

جب سے ڈسا ہے سہاروں نے
لاٹھی بھی سانپ نما اب دیکھتی ہے

Jab se dasa hai sahaaroon ne

Lathi bhi sanp numa ab dikhti hai

○●○●○●○●○●○●○●

مت گزرنا اپنوں کے سہارے دشمن کی بستی سے
ہوتے ہیں نیلام غازی اپنوں کے ہاتھوں اپنی ہی بستی سے

Mat guzarna apnoo ke sahare dushman ki basti se

Hote hain neelam gaazi apno k hi hathoon apni hi basti main

○●○●○●○●○●○●○●

بہت عرصے بعد آج اس کو بھر پور دیکھا ہے
مت پوچھو اس کا کیا کیا روپ دیکھا ہے

Bohut arse baad aj isko bharpoot daikha hai

Mat pucho iska kya kya roop daikha hai

○●○●○●○●○●○●○●

اس جوگی اس بین کا پتہ ہمیں بھی دو
جو دوستی کے روپ میں چھپے سانپوں کی خبر دے

Is jogi us been ka pta hmain b do

Jo dosti main chupay sanpoo ki khabar de

○●○●○●○●○●○●○●

ایک دھوکا بہت ضروری تھا
اعتبار کی حد سے نکل گیا تھا میں

Aik dhoka bht zrori tha

Aitbaar ki had se nikal gya tha main

○●○●○●○●○●○●○●

مخلص لوگوں کو بیوقوف کہتی ہے یہ دنیا

Mukhlis logoon ko behwqoof kehti hai ye dunya

○●○●○●○●○●○●○●

آج کی سب سے خوبصورت بات
دنیا کا سب سے گھٹیا کھیل پتا ہے کونسا ہے
لوگوں کے خلوص سے کھیلنا

Aj ki sab se Khubsurat bat

dunya ka sab se ghatya khaiil pta hai konsa

logoon k khaloos se khailna

○●○●○●○●○●○●○●

تعلقات کا آشیانہ بنانے کے لیے تنکا تنکا جوڑنا پڑتا ہے 

جسے گرانے کے لیے بد اعتمادی کا ایک جھونکا ہی کافی ہے

Taluqat ka asayana banay kay leya tinka tinka jorna parta hay

jisay girnay kay leya bad atmadii ka ak jhonka he kafi hay

○●○●○●○●○●○●○●

اتنے چہرے تھے اس کے چہرے پر 

آئینہ تنگ آ کے ٹوٹ گیا 

itnay chehray thay us kay chehray par ainya tang aa kay toot gaya

○●○●○●○●○●○●○●

میرے اداس رہنے کی وجہ تم تو نہیں ہو 

بس اعتبار ٹوٹ جانے کا یقین نہیں آ رہا

maray udass rehna ki waja tum to nahi ho

bass aitmad toot jany ka yaqeen nahi aa raha

○●○●○●○●○●○●○●

کوئی نہیں ہے یہاں اعتبار کے قابل




کسی کو راز بتاو گے مارے جاؤ گے

koi nahi yahan aitmad kay qabil

kis ko raz batoy gay maray joy gay

See also  Islamic poetry in urdu

○●○●○●○●○●○●○●

دھوکہ دینے والے کی بھی قدر کیجیے 

یہ بھی استاد کا درجہ رکھتا ہے

dhoka danay walay ki be qadar kejeya

ya be ustad ka darja rakhta hay

○●○●○●○●○●○●○●

کوئی حاجت ہو تو ملنے چلے آتے ہیں 

ہمیں یاروں نے مزار سمجھ رکھا ہے

koi hajat ho to milnay chalay aatay hain

hamain yaraon nay maraz samjh rakha hay

○●○●○●○●○●○●○●

مرد نے عشق کے نام پر عورت کو ہمیشہ چونا ہی لگایا ہے،

کبھی مہندی نہیں لگائى

Mard nay ishq kay nam par aurat ko hamasha chunaa he lagaya hay

kabi mehndii nahi lagai

○●○●○●○●○●○●○●

امانت صرف چیز یا رقم نہیں ہوتیں امانت راز کی بھی ہوتی ہیں اگر کوئی اپنے جذبات احساسات بیان کرے تو اس میں بھی خیانت نہ کریں

Imanat sirf cheez ya raqam nahi hotian imanat raz ki be hoti hain

agar koi apnay jazbat ehsasat beyan karay to is ma be kheyanat na karain

○●○●○●○●○●○●○●

ہم کو ڈوبانے کی کوشش انہوں نے کی

جن کو تیرنا ہم نے سکھایا تھا

Ham ko dubanay ki koshish unoy nay ki

jin ko tarna ham nay sekhaya tha

○●○●○●○●○●○●○●

زندگی کا سب سے زور دار تھپڑ

 بھروسہ مارتا ہے

Zindagi ka sab say zor dar thapaer bharosa marta hay

○●○●○●○●○●○●○●

بھروسہ تو اپنی سانسوں کا نہیں اور ہم انسانوں کا کر لیتے ہیں

bharosa to apni sansoo ka nahi or ham insano ka kar latay hain

○●○●○●○●○●○●○●

لوگ دھوکہ تب دیتے ہیں

جب آپ موقع دیتے ہیں

Log dhoka tab datay hain jab ap moka datay hain

○●○●○●○●○●○●○●

جس دن سے توڑا اعتبار میرا اس نے 

میرا اعتبار سے اعتبار اٹھ گیا

jis din say tora  aitbar mera us nay

mera aitbar say aitbar uth gaya

○●○●○●○●○●○●○●

کون ہوتا ہے مصیبت میں کسی کا دوست 

آگ لگتی ہے تو پتے بھی ہوا دیتے ہیں 

جن پر ہوتا ہے بہت دل کو بھروسہ

وقت پڑنے پر وہی لوگ دغا دیتے ہیں

kon hota hay musebat ma kisi ka dost

aagh lagti hay to patay be hawa datay hain

jin par hota hay bohat dil ko bharosa

waqt parnay par wohi log daga datay hain

○●○●○●○●○●○●○●

نمک کی طرح ہو گئے ہیں ہم اپنے ہی لوگ حسب ذائقہ استعمال کرتے ہیں

namak ki tarah ho gay hain ham apnay hi log hasbay zaiqa istemal karty hain

○●○●○●○●○●○●○●

آج پھر تمہاری یاد آگئی جب

 پان والے نے کہا چونا کتنا لگاؤ

aj phr tumari yad aa gai jab

oan walay nay kaha chuna kitna lagoy

○●○●○●○●○●○●○●

آپ کا خطرناک اور بزدل دشمن جو پیٹھ پیچھے آپ کی برائی کرے اور سامنے خوشامد آپ کا بہترین دوست جو آپ کے سامنے آپ کو آپ کی خامیاں گنوائے

ap ka khatarnak or buzdill dushman jo peath perchay apki burai karay or samnay khusamad ap ka behtreen dost jo ap kay samnay ap ko ap ki khamiyan ginway

○●○●○●○●○●○●○●

دل میں کھوٹ ہو تو دعا دوا اور محبت راستہ بدل لیتی ہیں

Dill ma khoy ho yo dua dea or Mohabat rasta badal lati ha

○●○●○●○●○●○●○●

سچائی ہمیشہ خاموش رہنے والے انسان کے اندر ہی ملتی ہے

جھوٹ بولنے والے تو ہمیشہ شور مچاتے ہیں 

sachai hamasha khamosh rehny walay insan kay andar he milti hay

jhoot bolnay walay to hamasha shorr machatay hain

○●○●○●○●○●○●○●

اصل موت تو تب آتی ہے جب آپ کو پتا چلتا ہے 

کہ آپ کا تو صرف استعمال کیا گیا تھا

asal moat to tab aati hay jab ap ko pata chalta hay

kay ap ka to sirf istemal keya gaya tha

○●○●○●○●○●○●○●

‏اعتماد ایک چھوٹا سا لفظ ہے جسے

پڑھنے میں سیکنڈ

سوچنے میں منٹ

سمجھنے میں دن

اور ثابت کرنے میں زندگی گزر جاتی ہے




Aitmad ak chota sa lafz hay jisay

parnay ma second

sochany ma minute

samajhnay ma din

or sabit karnay ma zindagi guzar jati ha

○●○●○●○●○●○●○●

منافق جب کسی کو گرانا چاہتا ہے 

تو دھکا نہیں سہارا دیتا ہے 

Munafiq jab kisi ko girama chahta hay

tu dokha nahi shara deta

○●○●○●○●○●○●○●

جو انسان آپ کو دھوکا دے 




کوشش کریں اس سے دور ہو جائیں 

کیونکہ اس نے بتا دیا کہ 

وہ کس اوقات اور کس سوچ کا مالک ہے

Jab insan apko dokha day

koshish karain us say door ho jainn

kuy kay

us nay bata deya kay

wo kis okat or kis soch ka malik hay

○●○●○●○●○●○●○●

منافقت کے ڈسے ہوئے

پھر خلوص پر بھی یقین نہیں رکھتے




munafkat kay dasay hovay

phir khaloos par be yaqeen nahi rakhtay

○●○●○●○●○●○●○●

اگر کسی کے جذباتوں اور احساسات کے ساتھ کھیل کر آپ کو لگتا ہے کہ آپ جیت گئے ہیں تو ایسی جیت سے ہار لاکھ درجے بہتر ہے 

agar kisi jazbaton or ehsasat kay sath khaik kar apko lagta hay kay ap jeet gay hain to asii jeet say har lakh darjay behtar hay

○●○●○●○●○●○●○●

منافقت کی ہمدردی دشمن کی تلوار سے زیادہ خطرناک ہے

munafakat ki hamdardii dushman ki talwar say zayada khatarnak hay

○●○●○●○●○●○●○●

ایسا اٹھا ہے ترے بعد تعلق سے یقین

اب تو میں چھت سے پرندے بھی اڑا دیتا ہوں

asa utha hay taray bad lalaq say yaqeen

ab to ma chatt say parinday be urra deta hon

○●○●○●○●○●○●○●

جب نکاح کی بات آتی ہے نا

تب سب کو اپنی مجبوریاں یاد آجاتی ہیں 

لیکن جب چسکے لینے ہوتے ہیں تب نہ تو کسی کی ماں کو ہارٹ اٹیک آتا ہے نہ کسی کے باپ کی عزت خاک میں ملتی ہے 

پیار جسم کو چھونے کا نام نہیں 

پیار تو روح کو چھوتا ہے 

Jab nikkah ki bat aati hay naw

tab sab ko apni majboriyan yad aa jati hain

lakin

Jab chaskay lanay hotay hain tab na to kisi ki bat ko heart attack ata hay

naa kisi kay Baap ki izat khak ma milti hay

pyar jism ko chunay ka nam nahi

See also  Eid sad poetry in poetry

pyar to rooh ko chuna hay

○●○●○●○●○●○●○●

یہ راز تو حشر والے دن ہی کھلے گا 

ہر شخص یہ کہتا ہے وفادار ہم ہی ہیں

Ya raaz to hasar walay din he khulay gaa

har sakhs ya kehta hay wafadar ham he hain

○●○●○●○●○●○●○●

‏اعتماد ایک چھوٹا سا لفظ ہے جسے

پڑھنے میں سیکنڈ

سوچنے میں منٹ

سمجھنے میں دن

اور ثابت کرنے میں زندگی گزر جاتی ہے

aitmad ak chota sa lagz hay jisay

parnay ma second

sochany ma minute

samajhnay ma din

or sabit karnay ma zindagi guzar jati ha

○●○●○●○●○●○●○●

منافق جب کسی کو گرانا چاہتا ہے 

تو دھکا نہیں سہارا دیتا ہے 

 

Munafiq jab kisi ko girama chahta hay

tu dokha nahi shara deta

○●○●○●○●○●○●○●

جو انسان آپ کو دھوکا دے 

کوشش کریں اس سے دور ہو جائیں 

کیونکہ اس نے بتا دیا کہ 

وہ کس اوقات اور کس سوچ کا مالک ہے

Jab insan apko dokha day

koshish karain usy say door ho jain

kuy kay

us nay bata deya kay

wo kis okat or kis soch ka malik hay

○●○●○●○●○●○●○●

منافقت کے ڈسے ہوئے

پھر خلوص پر بھی یقین نہیں رکھتے

Munafakat say dasay hovay

phir khaloos par be yaqeen nahi rakhtay

○●○●○●○●○●○●○●

اگر کسی کے جذباتوں اور احساسات کے ساتھ کھیل کر آپ کو لگتا ہے کہ آپ جیت گئے ہیں تو ایسی جیت سے ہار لاکھ درجے بہتر ہے 

 

agar kisi jazbaton or ehsasat kay sath khaik kar apko lagta hay kay ap jeet gay hain to asii jeet say har lakh darjay behtar hay

○●○●○●○●○●○●○●

میرے اندر کہیں کچھ ٹوٹا ہے

دعا کرو کہ اعتبار نہ ہو

Maray andar kahain kuch toota hay

dua karo kay aitbar naa hoo

○●○●○●○●○●○●○●

منافقت کی ہمدردی دشمن کی تلوار سے زیادہ خطرناک ہے

munafakat ki hamdardii dushman ki talwar say sayda khatarnak hay

○●○●○●○●○●○●○●

ایسا اٹھا ہے ترے بعد تعلق سے یقین

اب تو میں چھت سے پرندے بھی اڑا دیتا ہوں

 

asa utha hay taray bad lalaq say yaqeen

ab to ma chatt say parinday be urra deta hon

○●○●○●○●○●○●○●

جب نکاح کی بات آتی ہے نا

تب سب کو اپنی مجبوریاں یاد آجاتی ہیں 

لیکن جب چسکے لینے ہوتے ہیں تب نہ تو کسی کی ماں کو ہارٹ اٹیک آتا ہے نہ کسی کے باپ کی عزت خاک میں ملتی ہے 

پیار جسم کو چھونے کا نام نہیں 

پیار تو روح کو چھوتا ہے 

 

Jab nikah ki bat aati hay naw

tab sab ko apni majborian yad aa jati hain 

lakin

Jab chaskay lanay hotay hain tab na to kisi ki bat ko heart attack ata hay

naa kisi kay Baap ki izat khak ma milti hay

pyar jism ko chunay ka nam nahi

pyar to rooh ko chuna hay

○●○●○●○●○●○●○●

یہ راز تو حشر والے دن ہی کھلے گا 

ہر شخص یہ کہتا ہے وفادار ہم ہی ہیں

Ya raaz to hasar walay din he khulay gaa

har sakhs ya kehta hay wafadar ham he hain


○●○●○●○●○●○●○●

تم صرف میرے ہو کسی اور کے نہیں 

اِن الفاظ نے لوگوں کو بےوقوف بنا رکھا ہے


Tum sirf maray ho kisi or kay nahi

In alfaz nay logo ko bewaqoof bana rakha hay

○●○●○●○●○●○●○●

‏دھوکہ دینے والے اکثر شاطر دماغ اور دھوکہ

 کھانے والے زیادہ تر لوگ نرم دل ہوتے ہیں

Dhoka dany walay aksay shatirr demagh or dhoka

khanay walay zayada tar log naram dill hotay hain

○●○●○●○●○●○●○●

مطلب سے ملنے والے ملنے کا مطلب کیا جانیں

یہاں کوئی ایک بھی بنا مطلب کے بات نہیں کرتا

Matlab say milnay walay milnay ka matlab kya janain

yahan koi ak be bana matlab kay bat nahi kartaa

○●○●○●○●○●○●○●

صرف ایک دن لگتا ہے پیار ہونے میں

لیکن اگر وہی پیار میں دھوکا ملے نہ

تو پوری زندگی لگ جاتی ہے اسے بھلانے میں

Sirf ak din lagta hay pyar honay ma

lakin agar wohi pyar ma dhoka milay naa

to puri zindagi lag jati hay usay bhulany maa

○●○●○●○●○●○●○●

میرا بھروسہ ایسے ہی نہیں ٹوٹا

میں نے دیکھا ہے اسے غیروں کے ساتھ دل لگاتے

Mera bharosa asy hi nahi toota

ma nay dakha hay usy ghairon kay sath dill lagatay

○●○●○●○●○●○●○●

جب بھروسہ ٹوٹ جاتا ہے تب 

معافی مانگنے کا کوئی مطلب نہیں ہوتا

jab bharosa toot jata hay tab

mafi mangnay ka koi matlab nahi hota

○●○●○●○●○●○●○●

تاش کے پتوں کی طرح

اس نے آزمایا مجھے چالیں بدل کر

tash kay paton ki tarah

us nay azmaya mujhy chalain badal kar

○●○●○●○●○●○●○●

اپنی صورت بھی اک وہم لگتی ہے اب

اتنے آئینے مجھ کو دکھائے گئے




apni surat be ak waham lagti hay ab

itmay ainay mujh ko dekhay gay

○●○●○●○●○●○●○●

ہم سے بے وفائی کی انتہا کیا پوچھتے ہو

وہ ہم سے پیار سیکھتا رہا کسی اور کے لیے

ham say bay wafai ki inteha kya pochtay ho

wo ham say pyar seekhta raha kusi or kay leya

○●○●○●○●○●○●○●

خوشی کا وقت بھی گٌزر جاتا ہے دٌکھ کی گھڑی بھی 

لیکن آپ کا اِستعمال کیا گیا ہو آپ کو دٌھوکا دیا گیا ہو آپ کو دھتکارا گیا ہو یا آپ کے وجود کی دھجیاں بکھیر دی گئی ہوں اِس تکلیف سے نکلنے میں زمانے لگتے ہیں




Khushi  ka waqt be guzar jata hay dukh ki gharii be

lakin apka istemal keya gaya ho ap ko dhoka deya gaya ho apko dhudkara gaya ho ya ap kay wajood k dhajeya bikhar di gai hon is takleef say nikalnay ma zamanay lagtay hain

○●○●○●○●○●○●○●

اس کی جھوٹی باتوں کو بھی سچ سمجھتا رہا میں

اے عشق تو کس قدر انسان کو اندھا کر دیتا ہے

us ki jhooti bataon ko be sach samjhta taha hon

aay ishq tu kus qadar insan ko andha kar deta hay

○●○●○●○●○●○●○●

دعائیں مانگ تری عمر مجھ سے زیادہ ہو

تجھے میں جا کے دکھاؤں گی ایسے جاتے ہیں

See also  Shayari sms

Duain mang tari umar mujh say zayda ho

tyjhay ma jaa kay dekhoy gii asy jatay hain

○●○●○●○●○●○●○●

بھروسہ وہ نازک شیشہ ہے جو ایک مرتبہ ٹوٹ جائے 

تو پھر کبھی نہیں جڑتا اور اگر کبھی جڑ بھی جائے 

تو چہرے دو ہی نظر آتے ہیں

bharosa wo nazuk seesha hay jo ak martaba toot jay

to phir kabi nahi jurta or agar kabi jur b jay to chehra do hi nazar aatay hain

○●○●○●○●○●○●○●

وہ خسارہ ہمیشہ یاد رہتا ہے 

جو کسی کے ساتھ دل سے مخلص ہو کر کھایا ہو

wo khusara hamasha yad rehta hay

jo kisi kay sath dill say mukhkis ho kar khaya hon

○●○●○●○●○●○●○●

جس سے کرنی تھی میں نے راز کی بات 

اس کو اونچا سنائی دیتا ہے

jis say karni thi manay razz ki bat

us ko oncha sunai deta hay

○●○●○●○●○●○●○●

مجھے منزلوں کا شعور تھا مجھے راستوں نے تھکا دیا

کبھی جن لوگوں پہ غرور تھا مجھے انہوں نے ہی دغا دیا

mujhay manzilon ka shour tha mujhay raston nay thaka deya

kabi jin logo pay gharoor tha mujhay unoy nay he dhaga deya

○●○●○●○●○●○●○●

عورت کے سینسر اتنے تیز ہیں 

کہ وہ نظر اور نیت دونوں پہچان لیتی ہے 

دراصل وہ دھوکہ اس وقت کھاتی ہے

 جب وہ خود کو دھوکہ دیتی ہے

Aurat ka sensor itna tazz hay

kay wo nazar or neyat dono pehchan lati hay

darasal wo dokha us waqt khati hay

jab wo khud ko dhoka dati hay

○●○●○●○●○●○●○●

ہر انسان ایک جیسا نہیں ہوتا 

کبھی بھی کسی پر یقین مت کرو 

ہر انسان اچھا ہو 

ہو ہی نہیں سکتا

  1. har insan ak jesa nahi hota kabi be kisi par yaqeen mat karo

har insan acha ho

ho he nahi sakta

○●○●○●○●○●○●○●

ڈر لگتا ہے اب ان لوگوں سے 

جو کہتے ہیں میرا یقین کرو

Dar lagta hay ab logosay jo kehtay hain mera yaqeen karo

○●○●○●○●○●○●○●

اس کی جھوٹی باتوں کو بھی سچ سمجھتا رہا میں

اے عشق تو کس قدر انسان کو اندھا کر دیتا ہے

us ki jhooti baton ko be sach samjhta raha hon

aay Ishq

tu kis qadar insan ko andha kar deta hay

○●○●○●○●○●○●○●

دعائیں مانگ تری عمر مجھ سے زیادہ ہو

تجھے میں جا کے دکھاؤں گی ایسے جاتے ہیں

Duain mang tari unar mujh say zayda ho

tujhay ma ja kay dekhoy gi asy jatay hain

○●○●○●○●○●○●○●

جس طرح بچھو ڈنک مارنے سے باز نہیں آتا

اسی طرح دھوکے باز دھوکا دینے سے باز نہیں آتا

jis tarah bichu dang marny say bazznahi ata

usi tarah dhokhay bazz dhoka dany say bazz nahi ataa

○●○●○●○●○●○●○●

بھروسہ وہ نازک شیشہ ہے جو ایک مرتبہ ٹوٹ جائے 

تو پھر کبھی نہیں جڑتا اور اگر کبھی جڑ بھی جائے 

تو چہرے دو ہی نظر آتے ہیں

bharosa wo nazuk shesha ha jo ak martaba toot jay

to kabi be nahi jurta

or agar kabi jurr b hay to chehray do he nazar aatay hainn

○●○●○●○●○●○●○●

وہ خسارہ ہمیشہ یاد رہتا ہے 

جو کسی کے ساتھ دل سے مخلص ہو کر کھایا ہو




wo khasara hamasha yad rehta hay

jo kusi kay sath dill say mukhkis ho kar khaya hon

○●○●○●○●○●○●○●

جس سے کرنی تھی میں نے راز کی بات 

اس کو اونچا سنائی دیتا ہے

jis say karnii thi ma nay razz ki batt

jis ko unchaa sunai deta tha

○●○●○●○●○●○●○●

مجھے منزلوں کا شعور تھا مجھے راستوں نے تھکا دیا

کبھی جن لوگوں پہ غرور تھا مجھے انہوں نے ہی دغا دیا

mujy manzilon ka shour tha mujhay raston nay thaka deya

kabi jin logo pay gharoor tha mujhy unoy nay he daga deya

○●○●○●○●○●○●○●

عورت کے سینسر اتنے تیز ہیں 

کہ وہ نظر اور نیت دونوں پہچان لیتی ہے 

دراصل وہ دھوکہ اس وقت کھاتی ہے

 جب وہ خود کو دھوکہ دیتی ہے

 

Aurat ka sensor itna tazz hay

kay wo nazar or neyat dono pehchan lati hay

darasal wo dokha us waqt khati hay

jab wo khud ko dhoka dati hay

○●○●○●○●○●○●○●

ہر انسان ایک جیسا نہیں ہوتا 

کبھی بھی کسی پر یقین مت کرو 

ہر انسان اچھا ہو 

ہو ہی نہیں سکتا

 

har insan ak jesa nahi hota kabi be kisi par yaqeen mat karo

har insan acha ho

ho he nahi sakta

○●○●○●○●○●○●○●

ڈر لگتا ہے اب ان لوگوں سے 

جو کہتے ہیں میرا یقین کرو

Dar lagta hay ab un logo say

jo kehty hain mera yaqeen karoo

○●○●○●○●○●○●○●

جن کی فطرت میں ہو دھوکہ دینا

وہ لوگ چاہ کر بھی بدلا نہیں کرتے

Jin ki fitrat ma ho dhoka dena

wo log chaa kar be badla mahi karty

○●○●○●○●○●○●○●

بھروسہ ایک شخص توڑتا ہے اور اعتبار ہر شخص سے اٹھ جاتا ہے

bharosa ak shaks torta hay or aitbar har sakhs say uth jata hayy

○●○●○●○●○●○●○●

ہر شخص تو فریب نہیں دیتا 

مگر اب اعتبار زیب نہیں دیتا

har sakhs to faraib nahi deta

magar ab aitbar zaib nahi detaa

○●○●○●○●○●○●○●

خوبصورتی سے دھوکہ نا کھانا اے ابن آدم 

تلوار کتنی بھی خوبصورت ہو مانگتی تو خون ہے

khobsurti say dhoka na khana

aay ibn e Adam

talwar kitni be khoobsurat ho mangtii to khoon hay

○●○●○●○●○●○●○●

محبت سب اپنی مرضی سے کرتے ہیں

نکاح کی بات کرو تو گھر والے نہیں مانیں گے




Mohabat sab apni marzi say karty hain

nikah ki bat karo to ghar walay nahi manain gayin

○●○●○●○●○●○●○●

ﺍﺏ ﮨﻢ ﺳﮯ ﺯﻧﺪﮔﯽ ﮐﯽ ﺣﻘﯿﻘﺖ ﻧﮧ ﭘﻮﭼﮭﻮ

ﺑﮩﺖ ﻣﻄﻠﺒﯽ ﺗﮭﮯ کچھ ﻟﻮﮒ ﺟﻮ ﺗﻨﮩﺎ ﮐﺮ ﮔﺌﮯ

ab ham say zindagi ki haqeqat na pocho

bohat matlabi thay kuch log jo tanha kar gay

○●○●○●○●○●○●○●

جب ہمارے احساس کو بہت بری طرح روندا جاتا ہے

تو پھر کسی سے احساس کا رشتہ جوڑنے کا دل نہیں کرتا

Jan hamaray ehsas ko bohay buri tarah rondaa jata hay

to phir kisi sayehsas ka rista jorny ka dill nahi karta

○●○●○●○●○●○●○●

Leave a Comment