Khudi Poetry in Urdu

ہم اپنے مزاج سے چلتے ہیں صاحب
ہم پر حکم چلانے کی گستاخی مت کرنا

hum apny mizaj sy chlty hain sahib

hum par hukm chlany ki ghustakhi mat karna


چلو پھر مسکرایا جائے
بن ماچس لوگوں کو جلایا جائے

chloo phir muskuraya jay

bin machis logo ko jlaya jay


نیک نے نیک سمجھا بد نے بد جانا
جس کا جیسا ظرف تھا ویسا ہی پہچانا مجھے

naak ny naak samjhaa bad ny bad jana

jis kaa jesaa zarf thaa wasa hi phchana


اگر کوئی بھی آپ کو نیچا دکھانا چاہتا ہے
تو اس کا مطلب ہے کہ آپ اس سے کافی اوپر ہو

agar koi bhii apko nechaa dekhana chtaa hai

tu is kaa matlb hai ky ap is sy kafii upar hu


یونہی تو نہیں جلتا زمانہ ہم سے
ہم اپنے انداز ہی زمانے سے الگ رکھتے ہیں

yunhi nahi jalta zamana hum sy

hum apny andr hi zamany sy alg rehty hain


میری الگ ہی ایک دنیا ہے
دعا ہے کہ کسی کو ہم سے تکلیف نہ ہو

meri Alg hi ek duniya hai

dua hai ky kisi ko hum sy takleef na hu


تم دشمنوں کی بات کرتے ہو
ارے ہمیں تو اپنے دیکھ کے جل جاتے ہیں

tum dushmnoo ki bat karty hu

ary humein apny dekh ky jal jaty hain


نام اور پہچان بھلے ہی چھوٹی ہو
مگر خود کی ہونی چاہیے

naam or phchan bhly hii choti hu

magr khud ki huni chiya


صرف ان کے لیے عام رہتا ہوں
جو میرے لیے خاص ہیں

sirf un ky liya Am rehta hun

ju mery liya khass hain


تمہارا غرور ایسے توڑیں گے
دیکھنے والے بھی ہاتھ جوڑیں گے

tumhara gharor asy toryn gy

dekhny walt bhii hath joryn gyn


 

اکثر وہی لوگ اُٹھاتے ہیں ہم پر اُنگلیاں

جن کی ہمیں چُھونے کی اوقات نہیں ہوتی

Aksar woi log uthate hain hm par ungliyaan

Jin ki hmain Choone ki oqaat nahi hoti

○●○●○●○●○●○●○●

ہم بسا لیں گے اک دنیا کسی اور کے ساتھ
تیرے آگے روئیں اتنے بھی بغیرت نہیں ہیں ہم

Hm basa lain ge dunya ksi or ke sath 

Tere aage royain itne bhi bgairt nai hain hm

○●○●○●○●○●○●○●

خامیاں ہی نکال سکتے ہیں لوگ
برابری کرنے کی اوقات جو نہیں

Khamiyaan e nikaal sakte hain log

baraabri karne ki oqaat jo nahi

○●○●○●○●○●○●○●

 جھک کر سلام کرنے میں کیا حرج ہے
مگر سر اتنا مت جھکاؤ کہ دستار گر پڑے

Jhuk kar salam karne main kya harj hai

Magar sar itna mat jhukao ke dastaar gir pare

○●○●○●○●○●○●○●

مجھے اوقات کا کہتے ہوئے یہ ذہن میں رکھنا
تیرے نخرے سے تھوڑا قیمتی جوتا پہنتی ہوں

Muje oqaat ka kehte hue ye zehan main rakhna 

Tere nakhre se thora qeemti jota pehanti hu

○●○●○●○●○●○●○●

منہ پر سچ بولنے کی عادت ہے
اسی لئے بہت بد تمیز ہوں میں

Mu par such bolne ki adat hai

is liye bht badtmeez hu main

○●○●○●○●○●○●○●

‏اپنا وقار اپنا یقین اپنی پہچان اونچی رکھو
نظریں زمین پر مگر اپنی اڑان اونچی رکھو

Apna waqaar apna yakeen apni pehchaan onchi rakho

Nazrain zameen par magar apni urran onchi rakho

○●○●○●○●○●○●○●

بیٹا اکیلے ضرور ہیں لیکن
کسی کے چمچے نہیں ہیں

Beta akele zror hain lekin

Ksii ke chamchay nahi hain

○●○●○●○●○●○●○●

‏عزت کی خاک بھی قبول ہے

بھیک کا آسماں بھی نہیں لوں گی

💦💦Izzat ki khak bhi qabool hai

Bheeak ka asaman bhai qabool nae

💦💦

○●○●○●○●○●○●○●

منافقت بھی کوئی کرنے کی چیز ہے

دل بڑا کیجئے ہمارا مقابلہ کیجئے

🌼🌸🌺Munafqat bhi koi karnay ki cheez ha dill bara kijiya hamara muqabala kijiya🥀🥀

🌼🌸🌺

○●○●○●○●○●○●○●

ہماری محبت کی نزاکت سے ابھی نا واقف ہو تم

ہم اسے جینا سکھا دیتے ہیں جسے مرنے کا شوق ہو



Hamri muhabat ki nazaqat sy abhi n waif ho tum

hum isy jeena sekha dety hn jisay marny k shoq ho

🥰🥰🥰

○●○●○●○●○●○●○●

دل چاہتا ہے اپنی معصومیت پر ایک کتاب لکھ دوں

پر ڈر لگتا ہے کوئی میرا طلبگار نہ ہو جائے

dill chahta ha apni masomiyat par ak kitab likh don

par daar lgta hai koi mera talabgar na ho jaya👸🏻👸🏻
○●○●○●○●○●○●○●

سلجھے ہوئے ضرور ہیں مگر

الجھنے سے گریز کیجیئے گا

suljhay hoa zaror hin mager oljhanay say guraiz kijiya ga

○●○●○●○●○●○●○●

پہچان سے ملا کام تھوڑے وقت کے لئے رہتا ہے

کام سے ملی پہچان زندگی بھر رہتی ہے

Phachan say mila kaam thoray waqat kay liya rahta hai

Kam say mili phachan zindagi bhar rahti ha

○●○●○●○●○●○●○●

ہم جیسا بننا مشکل نہیں 

لیکن ہم جیسا ہونا مشکل ہے

Hum jesa banna mushkil nae

Lakin hum jesa hona muskil h

○●○●○●○●○●○●○●

لوگ ہمارے ساتھ مقابلے کی باتیں کرتے ہیں 

ہم نے تو طوفانوں کے خلاف دیے جلا کر جیت حاصل کی ہے

Laog hamaray shat muqabalay ki batyin karty hain

Hum nay tofano kay khelaf diya jala kar jeet hasil ki hai

○●○●○●○●○●○●○●

دل میں اتر جانے کی عادت ہے میری

اپنی الگ پہچان بنانے کی عادت ہے میری

See also  Sharo shayri

جتنا کوئی گہرا امتحان لیتا ہے

اتنا ہی میٹھا جواب دینے کی عادت ہے میری

Dill mai otar janay ki adat ha mari

Apni alag phacahn banany ki adat ha mari

Jitna koi ghara imtihan lata hai

Itna hi meetha jawab denay ki adat hai mari

○●○●○●○●○●○●○●

اپنے سر سے وار کر پھینک دیتا ہوں انھیں

جن کو گمان ہو کہ ان کے بغیر جی نہیں سکتا

Apnay sir say war kar phaink deta hon inhyin

Jin ko guman ho kay in ky bagair jee nae sakta ○

●○●○●○●○●○●○●

اپنے کردار کو اتنا بلند کرلو کہ چھوٹی چھوٹی تکلیفیں تمہیں متاثر نہ کر سکیں

Apny kirdar ko itna buland kar lo kay choti choti taqleefayin tumhay mutasir na kar sakyin

○●○●○●○●○●○●○●

بدلا تو وہ لیتا ہے جن کا دل چھوٹا ہوتا ہے

ہم تو معاف کر کے ان کو دل سے نکال دیتے ہیں 

Badla to wo leta hai jin ka dill chota hota h

Hum to maaff kar kay in ko dill say nikal detay hain

○●○●○●○●○●○●○●

مرد حق باطل کے آگے مات کھا سکتے نہیں 




سر کٹا سکتے ہیں لیکن سر جھکا سکتے نہیں

Marad Haq Batil kay agay maat kha saktay nae

Sir kata sakty hin lakin sir jhuka sakty nae

○●○●○●○●○●○●○●

عزت نفس سے ہر حرف کو اونچا رکھو

اپنی آواز نہیں ظرف کو اونچا رکھو

Izzat nafas har haraf ko oncha raho

Apni awaz nae Zaraf ko oncha rakho

○●○●○●○●○●○●○●

میں کسی سے ناراض نہیں ہوتا 

بس خاص سے عام کر دیتا ہوں

Mai kisi say naraz nae hota

Bus khas say aam kar deta ho

○●○●○●○●○●○●○●

میں اپنی ہر ضد پوری کروانے کی عادی ہوں 

میں پاپا کی بگڑی ہوئ نواب زادی ہوں

Mai apni har zid pori krwanay ki Adi hon

Mai papa ki bigri hoi Nawab zadi hon

○●○●○●○●○●○●○●

درخت نہیں ہوں کاٹ کے چلے جاؤ گے 

پہاڑ ہوں گرانے میں تیری نسلیں مٹ جائیں گی

Darakhat nae hon kaat kay chaly jayo gay

Pahar hon giranay ma tari naslayin mitt jayin gyin

○●○●○●○●○●○●○●

جب عرش والا آپ کو عزت دے

تو فرش والوں کی سازشیں بیکار جاتی ہے

Jab arash wala ap ko izzat day

To farash walon ki shazisahyin bekar jati han

○●○●○●○●○●○●○●

ہم جیسا نہیں ملے گا جہانوں میں کہیں 

آپ جیسے تو پڑے راہ میں مل جاتے ہیں 

Hum jesa nae milay ga jahano ma kahain

Ap jesay to paray rah mai mill jatay han🔥🔥

○●○●○●○●○●○●○●

ہمارے جیسا بننا تھا تو بچپن سے بگڑنا تھا

اب یوں کرو ہمارے شریک بن جاو یا مرید بن جاو

Hamaray jesa banna tha to bachpan say bigarna tha

Ab yoon karo hamary shareek ban jayo ya hamary Mureed ban jayo

🌸🌼🌸

○●○●○●○●○●○●○●

بلندی پے پہنچ کر اپنی اوقات بھول جانے والے پرندے کو عقاب نہیں کہتے

Bulandi pay pohanch kar apni oqat bhool janay walay parinday ko oqab nae khaty

🦅🦅🦅

○●○●○●○●○●○●○●

غلط كو غلط کھل کر کہیں کیونکہ

تاریخ ٹکرانے والوں کی لکھی جاتی ہے 

تلوے چاٹنے والوں کی نہیں

🥀Galat to galat khul kar kahin kun ky🔥🔥

🥀Tareekh thukranay walon ki likhi jati ha🔥🔥

🥀Talway chatnay walon ki nae

🔥🔥○●○●○●○●○●○●○●

میں آگ لگا دوں گا ان خواہشوں کو 

جن کی وجہ سے مجھے جھکنا پڑے




Ma agg laga don ga in khawaishon ko

Jin ki waja sy muja jhukna paray

🔥🥀🔥

○●○●○●○●○●○●○●

تھوڑی تمیز سے بات کرنا ہم سے

 بڑے بدتمیز ہیں ہم 

Thori tameez say baat karana hum say

Baray batmeez hain hum

😎😎😎

○●○●○●○●○●○●○●

خود کو منوانے کا ہنر ہمیں آتا ہے 

ہم وہ قطرہ ہیں جس کے گھر دریا آتا ہے

Khud ko manwaany ka hunar hamay ata hai

Hum qatra hain jis kay gahr darya ata ha

○●○●○●○●○●○●○●

یہ منافقت ہمارے بس کی بات نہیں ہے 

ہم تو دشمنوں سے بھی ہنس کر ملتے ہیں

Ya munafaqt hamary bus ki bat nae hum to dushmano say b huss ky bat karty hn

🙏😎🙏

○●○●○●○●○●○●○●

ہمارا انداز چُرا لینے سے 

آپ ہم جیسے نہیں ہو سکتے

🥀🥀Hamra andaz chura lanay say

🥀🥀

Ap hum jesay nae ho sakaty😎😎😎○●○●○●○●○●○●○●

بگڑتی ہی جا رہی ہوں

کہ مجھ کو سدھارنے والے اکتا چکے اب

😎😎Bigarti hi ja ri hon🙏🙏

😢😖Ka muj ko sudharnay walay okta chukay aab🤐😢

💘💘○●○●○●○●○●○●○●

جو کل تک ایڈ ہونے کے لیے ترستے تھے 

وہ بچے آج برابری کرنے کا سوچ رہے ہیں

Jo kal tak aid honay kay liya tarasaty thy

Wo bacahy aj barabri karany ka soch rahya hin

🐹🐹🐹

○●○●○●○●○●○●○●

مان لیتا ہوں برا ہوں 

مگر دو چہرے نہیں رکھتا

Maan lata hon bura hon

Mager do charahy nae rakhta

○●○●○●○●○●○●○●

چاہے دنیا والوں سے تھوڑا کم جیئں گے

لیکن جتنا جیئں گے سر اٹھا کے جیئں گے

Chahay dunia walon say thofa kam jeeyain

Lakin jitna jeeyin gay sir otha kay jeeyin

○●○●○●○●○●○●○●

راستے کٹھن بھی ہوں تو سینہ تان کے چلتے ہیں

ہماری عادت نہیں مشکل راستوں سے رخ موڑنا

Rastay kathan bhi hon to seena taan kay chalty hain

See also  Ishq Poetry in Urdu

Hamark adat nae mushkil raston say rukh morna

○●○●○●○●○●○●○●

وہ جو کرتے ہیں ہمیں مٹانے کے دعوے 

شائد واقف نہیں ہمارے حوصلوں سے

Wo jo kraty hn humhay matany kay daway

Shayed waqaif nae hmaray. Hoslon say

○●○●○●○●○●○●○●

میرے ہاتھوں میں پلنے والے پرندے

سکھانے لگے اب مجھے پرواز کے طریقے

Meray haton ma palnay wslay prinday

Sekhanay lagay ab muja parwaz kay tareeqay

○●○●○●○●○●○●○●

مت کرنا تمنا کسی کو پانے کی 

بڑی بے درد نگاہیں ہیں زمانے کی

تو خود کو بنا قابل اس قدر

کہ تمنا کریں لوگ تجھے پانے کی

Maat karna tamana ko panay ki

Bari bay dard nigahayin hain zamnay ki

To khud ko bana qabil is qader

Kay tamna karin log tujay panay ki

○●○●○●○●○●○●○●

جنگ لڑنی ہی پڑتی ہے اپنے زور بازو پر 

زندگی کے میدانوں میں معجزے نہیں ہوتے

Jung larni hi parti hai apnay zoare bazo par

Zindagi ky medano mai mujzay nae hotay

○●○●○●○●○●○●○●

ہٹ کر چلے وہ ہم سے جسے سر عزیز ہو

ہم سر پھروں کیساتھ کوئی سر پھرا چلے

Haay kar chalay wo hum sy jesay sir azeez ho

Hum sir pheron kay shat koi sir phir chalay

○●○●○●○●○●○●○●

لہروں سے لڑتے ہیں ہم دریا میں اتر کر

ساحل پہ کھڑے ہو کر سازش نہیں کرتے

Lahron say lartay hin hum darya mai otar kar

Sahil pay kharay ho kar shazish nae kartay○

●○●○●○●○●○●○●

میں وہ چراغ ہوں جو آندھیوں میں روشن تھا

خود اپنے گھر کی ہوا نے بجھا دیا ہے مجھے

Ma wo charag hon jo andhon ma roshan tha

Khud apnay ghar ki hawa bhuja dia ha muja

○●○●○●○●○●○●○●

جھکتا نہيں يہ سر کسی نواب کے آگے

ہم اپنی غريبی ميں بھی اميری کی ادا رکھتے ہيں

Jhankta nae ya sir kisi nawab kay agay

Hum apni gareebi ma bhi ameeri ki adaa rahkty han

○●○●○●○●○●○●○●

چاہے دنیا والوں سے تھوڑا کم جیئں گے

لیکن جتنا جیئں گے سر اٹھا کے جیئں گے

Chahay dunia walon say thora kam jeeyain gay

Lakin jitna jeeyan gay sir otha kay jeeyain gay

○●○●○●○●○●○●○●

راستے کٹھن بھی ہوں تو سینہ تان کے چلتے ہیں

ہماری عادت نہیں مشکل راستوں سے رخ موڑنا




Rasty khathan bhi hon to seena taan kay chalaty han

Hamari addat nae mushkil raston say rukh morna

○●○●○●○●○●○●○●

وہ جو کرتے ہیں ہمیں مٹانے کے دعوے 

شائد واقف نہیں ہمارے حوصلوں سے

Wo jo karaty hn humay matanay kay daway

Shayed waqif nae hamray hoslon say

○●○●○●○●○●○●○●

میرے ہاتھوں میں پلنے والے پرندے

سکھانے لگے اب مجھے پرواز کے طریقے

Mery haton ma palnay walay prinday

Seekahnay lagay ab muja parwaz kay tareeqay

○●○●○●○●○●○●○●

مت کرنا تمنا کسی کو پانے کی 

بڑی بے درد نگاہیں ہیں زمانے کی

تو خود کو بنا قابل اس قدر

کہ تمنا کریں لوگ تجھے پانے کی

Mat karna  tamana kisi ko panay ki

Bari bay dard nigahain han zamany ki

To khud ko bana qabil is qader

Kay tmana karin loag tujay panay ki

○●○●○●○●○●○●○●

جنگ لڑنی ہی پڑتی ہے اپنے زور بازو پر 

زندگی کے میدانوں میں معجزے نہیں ہوتے

Jung larni hi parti ha apnay zore bazo par 

Zindagi kay medano ma mujzay nae hoty

○●○●○●○●○●○●○●

ہٹ کر چلے وہ ہم سے جسے سر عزیز ہو

ہم سر پھروں کیساتھ کوئی سر پھرا چلے

Haat kar chalay hum say jesay sir aziz ho

Hum sir phiron ky shat sir phira chalay

○●○●○●○●○●○●○●

لہروں سے لڑتے ہیں ہم دریا میں اتر کر

ساحل پہ کھڑے ہو کر سازش نہیں کرتے

Lahron say lartay han hum darya ma otra kar

Sahil pay kharay ho kar shazish nae karty

○●○●○●○●○●○●○●

میں وہ چراغ ہوں جو آندھیوں میں روشن تھا

خود اپنے گھر کی ہوا نے بجھا دیا ہے مجھے

Ma wo charag hon jo andiyon ma roshan tha

Khud apnay ghar ki hawa nay bhuja dia ha muja

○●○●○●○●○●○●○●

جھکتا نہيں يہ سر کسی نواب کے آگے

ہم اپنی غريبی ميں بھی اميری کی ادا رکھتے ہيں

Jhukhta nae ya sir kisi nawab kay agay

Hum apni gareebi ma bhi ameeri ki ada rakhty hn

○●○●○●○●○●○●○●

‏وفاوں سے مکر جانا ہمیں آیا نہیں اب تک

جو واقف نہ ہو چاہت سے ہم ان سے ضد نہیں کرتے

Wafayo say mujar jana humayin aya nae ab tak

Jo waqif na ho chahat say hum in say zid nae karaty

○●○●○●○●○●○●○●

کردار میں میرے بھلے اداکاریاں نہیں ہیں

خودداری ہے غرور ہے پر مکاریاں نہیں ہیں

Kirdar ma meray bhalay adakariyan nae han

Khudariyan ha garoor ha par makariyan nae han

○●○●○●○●○●○●○●

جھانکنے کی بہترین جگہ اپنا گریبان

اور رہنے کی صحیح جگہ اپنی اوقات ہے

Jhankanay ki bhatreen jagha apna girryban

Or rahnay ki jagja sahi jagha apni oqat hai

○●○●○●○●○●○●○●

وہ ناراض ہے تو ناراض ہونے دو

کسی کے قدموں میں گر کر جینا ہمیں نہیں آتا

Wo naraz ha to naraz hony do

Kisi kay qadmon ma gir kar jeena humay nae ata

○●○●○●○●○●○●○●

مخلص ہیں تو مختصر ہیں

See also  Judai Poetry in Urdu

مطلبی ہوتے تو ہجوم ہوتا

Mukhlis hn to mukhtasir hn

Matlabi hoty to hajoom hota

○●○●○●○●○●○●○●

کسی کو دیکھ کر شخصیت نکھارنے والے نہیں ہیں ہم

ہم وہ ہیں جس کی نقل اہل زمانہ اتارا کرتا ہے




Kisi ko deakh kar shaksiyat nikharany walay hn hum

Hum wo hn jis ki naqal ahle zamna otara karta ha

○●○●○●○●○●○●○●

ہماری نرمی کو ہماری کمزوری نہ سمجهنا

سر جهکا کر چلتے ہیں تو صرف خدا کے خوف سے

Hamari narmi ko hamari kamzori na samjana

Sir jhuka kar chalty hain to sirf khudha kay khoof say

○●○●○●○●○●○●○●

جس نے دیا قطرہ بھر ساتھ ہمارا 

رہی زندگی تو سمندر لوٹائیں گے

Jis nay dia qatra bhar shat hamra

Rahi zindagi to sumander lotayin gay

○●○●○●○●○●○●○●

میں خود کا مقابلہ کسی سے نہیں کرتا

میں جیسا بھی ہوں الحمداللّہ بہترین ہوں

Ma khud ka muqabala kisi say nae kata

Mai jesa hon Allhumdolilah bhatareen hon

●○●○●○●○●○●○●

وہ خود ہی جان جاتے ہیں بلندی آسمانوں کی

پرندوں کو نہیں دی جاتی تعلیم اڑانوں کی

Wo khud hi jan jatay han bulandi asmano ki

Parindon ko nae di jati taleem orano ki

○●○●○●○●○●○●○●

‏وفاوں سے مکر جانا ہمیں آیا نہیں اب تک

جو واقف نہ ہو چاہت سے ہم ان سے ضد نہیں کرتے

Wafayon say mur jana humay aya nae ab tak

Jo wafiq na ho chahat sy hum in say zid nae karty

○●○●○●○●○●○●○●

کردار میں میرے بھلے اداکاریاں نہیں ہیں

خودداری ہے غرور ہے پر مکاریاں نہیں ہیں

Kirdar mai mery bhalay Adakariyan nae han

Khudariyan hai Garoor ha par makariayn nae ha

○●○●○●○●○●○●○●

جھانکنے کی بہترین جگہ اپنا گریبان

اور رہنے کی صحیح جگہ اپنی اوقات ہے

Jhankanay ki bhatreen jagha apana gireban 

Or rahnay Ki sahai jagha apni oqat hai

○●○●○●○●○●○●○●

وہ ناراض ہے تو ناراض ہونے دو

کسی کے قدموں میں گر کر جینا ہمیں نہیں آتا

کردار میں میرے بھلے

اداکاریاں نہیں ہیں

خودداری ہے غرور ہے پر مکاریاں نہیں ہیں

Wo naraz hai to naraz hony do

Kisi ky qadmon ma gir kar jeena hamyain nae ata

Kirdar mai mary bhalay

Adakariyan nae hainn

Khawariyan ha garoor hai par makariyan nae hain

○●○●○●○●○●○●○●

مخلص ہیں تو مختصر ہیں

مطلبی ہوتے تو ہجوم ہوتا

Mukhlish hn to mukhtasir hin

Matlabi hoty to juram hota

○●○●○●○●○●○●○●

کسی کو دیکھ کر شخصیت نکھارنے والے نہیں ہیں ہم

ہم وہ ہیں جس کی نقل اہل زمانہ اتارا کرتا ہے

Kisi ko deakh kar shaksiyat nikharny walay hain hum

Hum wo hai jis ki naqal ahlae Zamana otarta hai

○●○●○●○●○●○●○●

ہماری نرمی کو ہماری کمزوری نہ سمجهنا

سر جهکا کر چلتے ہیں تو صرف خدا کے خوف سے

Hamri narmi ko hamari kamzori na smjana

Sir jhuka kar chalty hi. To sirf khuda kay khoff say

○●○●○●○●○●○●○●

جس نے دیا قطرہ بھر ساتھ ہمارا 

رہی زندگی تو سمندر لوٹائیں گے

Jis nay dia qatra bhar shat hamara

Rahi zindagi to smundar lotayin gy

○●○●○●○●○●○●○●

میں خود کا مقابلہ کسی سے نہیں کرتا

میں جیسا بھی ہوں الحمداللّہ بہترین ہوں

Ma khud ka muqabala kisi say nae kata

Mai jesa hon Allhumdolilah bhatareen hon

○●○●○●○●○●○●○●

وہ خود ہی جان جاتے ہیں بلندی آسمانوں کی

پرندوں کو نہیں دی جاتی تعلیم اڑانوں کی

Wo khud hi jan jaatay hn

Bulandi asman ki

Parindon ko nae dee jati

Taleem orano ki

○●○●○●○●○●○●○●

اپنی تعریف خود کریں

برائی کرنے کے لیے لوگ موجود ہیں

Apni tareef khud karin

Burayi karnay kay liya loag majood hain

○●○●○●○●○●○●○●

خود کو سب سے بہتر سمجھ لینا 

یہ ایک ایسی بیماری ہے 

جو انسان کو کسی قابل نہیں چھوڑتی

Khud ko sab say bhatter smj lana yah ak asi bemari hai

Jo insan ko kisi qabil nae chorti

○●○●○●○●○●○●○●

ظالم دنیا میں اونچا نام ہے

جلتی ہے دنیا ہم سے جلانا ہمارا کام ہے

Zalim duniya mai oncha naam hai jalti hai duniya hum say jalana hmara kam ha

○●○●○●○●○●○●○●

ہمارے مقام سے جلتے کیوں ہو 

خدا بھی سر دیکھ کر سرداری دیتا ہے

Hamray mukam say jaltay ho

Khudha bhi sir deakh kar sardari deta ha

○●○●○●○●○●○●○●

ہم کسی کے سامنے جھکتے نہیں

جہاں عزت نہ ملے وہاں روکتے نہیں 




Hum kisi kay smnay jhukaty nae

Jahann izzat na milay wahan roktay nae

○●○●○●○●○●○●○●

کشش پیدا کر اپنے کردار میں

زمانہ خود تیری آہٹ کے پیچھے آئے گا

Kasish peda kar apnay kerdar mai

Zamna khud tari ahat kay pechay aya ga

○●○●○●○●○●○●○●

جہاں ہماری مخالفت عروج پر ہو

ہم وہاں پر قدم شوق سے رکھتے ہیں

Jahan hamari mukhalfat arooj par ho

Hum wahan par qadum shoq say rakhty hain

○●○●○●○●○●○●○●

جن کی جیسی اوقات 

وہ کرتے ہیں ہمارے بارے میں ویسی بات 

🔥🔥Jin ki jesi oqat

🔥🔥Wo karty hn wesi hamray baray mai bat

🔥🔥○●○●○●○●○●○●○●

آپ سے حسد کرنے والے آپ کی خوبیوں سے زیادہ باخبر ہیں

Aap say hasad karnay walay ap ki khobiyon say zayda ba kahber hain

○●○●○●○●○●○●○●

Leave a Comment