Connect with us

Urdu Shayari

Paisa Poetry in Urdu

خالی جیب والا مرد دنیا کی تمام عورتوں کے لیے بدصورت ہوتا ہے

Khali jaib wala mard dunya ki tamaam ortoon k liye bad surat hota hai

○●○●○●○●○●○●○●

دنیا نے تیری یاد سے بیگانہ کر دیا
تجھ سے بھی دلفریب ہیں غم روزگار کے

Dunya ne teri yaad se begaina kar dia

Tujh se bhi dil fareb hain gham rozgaar ke

○●○●○●○●○●○●○●

پیسے کو اہمیت نا دو
کیوں کہ پیسے سے لوگ تو خریدے جا سکتے ہیں لیکن عزت نہیں

Paise ko aehmiyat na do

ku k paiss se to log khareday jaa sakte hain lekin izzat nai

○●○●○●○●○●○●○●

پیسہ کمانے کے لیے اتنا وقت خرچا نہ کرو کہ
پیسہ خرچ کرنے کے لیے زندگی میں وقت ہی نہ ملے

Paisa kamane k liye itna wakt kharcha na kro k

Paise kharch krne k liye zindgai main e wakt hi na mile

○●○●○●○●○●○●○●

کھڑا ہوں آج بھی روٹی کے چار حرف لیے
سوال یہ ہے کتابوں نے کیا دیا مجھ کو

khara huu aj bhi roti ke chaar harf liye

sawaal ye hai kitaaboon ne kyaa diaa muj ko

○●○●○●○●○●○●○●

زندگی میں پیسہ نمک کی طرح ہوتا ہے 

اگر زیادہ ہو جائے تو ذائقہ بگاڑ دیتا ہے 

Zindagi mai paissa namak ki tarha hota hai

Ager zayda ho jaya to zaiqa bekar deta ha

🔥🔥🔥

○●○●○●○●○●○●○●

جیب بھاری ہو تو دشمن بھی خطائیں معاف کر دیتے ہیں

اور ہاتھ خالی ہو تو سگے بہن بھی سلام نہیں کرتے 

Jaib bhari ho to dushman bhi khatayin maaff kar detay hain 

Or hat khali ho to sagay behan bhai bhi salam nae karty

○●○●○●○●○●○●○●

جیب خالی ہو تو دانائی کا اظہار نہ کر

ایسی باتوں کا بڑے لوگ برا مانتے ہیں




Jaib khali ho to danayi ka izhar na karna

Asi bataon ka baray loag bura mantay hain

○●○●○●○●○●○●○●

اس غریبی سے پناہ مانگو جو مایوس کر دیتی ہے 

اس مال سے پناہ مانگو جو مغرور کر دیتا ہے

Asi gareebi say pana mango jo mayoos kar deti ha

Is maal say panah mango jo magror kar deti ha🙏🙏🙏🙏

○●○●○●○●○●○●○●

بندا کتنا بھی امیر کیوں نہ ہو 

وہ کبھی بھی گزرے ہوۓ وقت کو نہیں خرید سکتا

Banda kitna b ameer kun na ho wo kbhi bhi guzray hoya waqat ko khareed nae skata

🤑🤑🤑🤑🤬

○●○●○●○●○●○●○●

دنیا میں پیسے سے ہر شے خریدی جا سکتی ہے مگر تین چیزے نہیں خریدی جا سکتی وہ ہے زندگی صحت اور خوشیاں 

Dunia ma pasay say har shay khareedi ja skati ha mager

Teen cheezyin nae khareedi ja sakti wo ha zindagi sahat or khusiyan

○●○●○●○●○●○●○●

دولت ہو تو پردیس میں بھی دیس ہے 

اور غربت ہو تو دیس میں بھی پردیس ہے

غربت انسان کو اپنے ہی شہر میں اجنبی بنا دیتی ہے

Dolar ho to pardais ma b pardais ha

Or gurbat ho to pardais ma bhi pardais h

Gurbat insan ko apnay hi sahar mai ajnabi bana deti ha

○●○●○●○●○●○●○●

غربت انسان کو اپنے ہی شہر میں انجان بنا دیتی ہے

Gurbat insan ko apnay hi sahar mai ajnabi bana deti ha

○●○●○●○●○●○●○●

انسان بهی کتنا خودغرض ہے

پیسہ کمانا جانتا ہے پر رشتے نبھانا نہیں جانتا

Insan b kitna  khud garaz hai

Paisa kamana janta hai ristahy nibhana nae janta

○●○●○●○●○●○●○●

پیسہ وہ واحد چیز ہے جو کسی بھی صورت میں اپنی قدر نہیں کھوتا

Paisa wo Wahid cheez ha jo kisi b surt ma apni qader nae khota

○●○●○●○●○●○●○●

لوگوں کے محل دیکھ کر اپنے آپ کو غریب مت سمجھو

کیونکہ 

امیر اور غریب کی قبر ایک جیسی ہوتی ہے

Logon kay mahal deakh kar apnay ap ko gareeb mat samjo

Kun kay

Ameer or gareeb ki qaber aik jesi hoti hai

○●○●○●○●○●○●○●

دل کا امیر انسان دولت سے غریب نہیں ہو سکتا 

جبکہ دولت کا امیر انسان دل سے غریب ہوسکتا ہے

Dill ka ameee insan folat say gareeb nae ho sakta

Jabkay dolat ka ameer insan dill say gareeb ho sakta hai

○●○●○●○●○●○●○●

امیر کی بیٹی کا شادی کا سوٹ جتنے پیسوں کا ہوتا ہے اس سے آدھے سے بھی کم پیسوں میں غریب کی بیٹی کی شادی ہو جاتی ہے.

Ameer ki bati ka shadi ka soot jitnay pason ka hota hai us say adhay passon ma gareeb ki beti ki shadi ho jati ha

○●○●○●○●○●○●○●

کمائی چھوٹی یا بڑی ہو سکتی ہے 

مگر روٹی کا سائز لگ بھگ سبھی گھروں میں ایک جیسا ہی ہوتا ہے

Kamayi choti ya bari ho sakti hai

Mager roti ka saiz lag bhag sabhi gaharon mai ak jesa hi hota ha

●○●○●○●○●○●○●

بننا ہے تو دین دار بنو 

مالدار تو فرعون بھی تھا

Banta hi to deen dar bano

See also  Beautiful poetry in urdu

Maldar to firyon bhi tha

○●○●○●○●○●○●○●

جہیز کے فتنے دب جائینگے ایک دن

یا رب کسی غریب کی بیٹی جواں نہ ہو

Jahaiz kay fitany daab jayin gayin ak din

Ya rab kisi gareeb ki bati jawan na ho

○●○●○●○●○●○●○●

کڑی دھوپ میں جلتا ہوں اس یقیں سے 

میں جلوں گا تو میرے گھر میں اجالے ہوں گے




Kaarri dhoop ma jalta hon is yaqeen say

Mai jalon gaa to meray ghar mai ojalay hon gay

○●○●○●○●○●○●○●

گندم امیر شہر کی ہوتی رہی خراب

بیٹی مگر غریب کی فاقوں سے مرگئی

Gandum ameer shahar ki hoti rahi kharab beti gareeb ki faqon say maar gayi

○●○●○●○●○●○●○●

رزق صرف یہ نہیں کہ تمهیں کهانا ملے 

بلکہ اچهی نوکری اچهے ماں باپ اچهی اولاد بهی بہترین رزق ہیں

Rizq sirf ya nae kay tumhay khana

milay balkay achi nokri achay maa

baap achi olad bhi bhatareen rizq hain

○●○●○●○●○●○●○●

پیسہ چیز ہی ایسی ہے 

بڑے بڑے رشتے اور تعلق بھلا دیتا ہے .

Paisa cheez hi asi ha

Baray baray risthay or taluq bhula deta hai

○●○●○●○●○●○●○●

‏غریب بندہ روٹی کے پیچھے بھاگتا ہے 

اور امیر بندہ روٹی ہضم کرنے کے لیے بھاگتا ہے

Gareeb banda roti kay pachay bhagta hai

Or ameer banda roti hazam karany kay liya bhagta ha

○●○●○●○●○●○●○●

آداب اور اخلاق خریدے نہیں جاتے

دولت سے گفتگو کا سلیقہ نہیں آتا

Adab or ikhlaq khareeday nae jatay

Dolat sy goftago ka saliqa nae ata

○●○●○●○●○●○●○●

دیکھی جو گھر کی غربت تو چپکے سے مر گئی 

ایک بیٹی اپنے باپ پہ احسان کر گئی

Dekhi jo ghar ki gurbat to chupkau say maar gayi

Ak beti apnay baap pay ehsan kar gayi

○●○●○●○●○●○●○●

میں نے بہت سے جھونپڑے والوں کو سکون سے سوتے دیکھا ہے 

میں نے بہت بڑے محل والوں کو بے سکون ہوتے دیکھا ہے

Mai nay buht jhonparay walon ko sakoon say sotay dekha hai

Ma ny buht baray mahal walon ko bay sakoon hoty dekha ha

○●○●○●○●○●○●○●

بخیل آدمی کی دولت اس وقت باہر آتی ہے 

جب وہ خود زمین کے اندر جاتا ہے

Bakheel admi ki dolat is waqat bahir ati ha jab wo khud zameen kay under jata hai

○●○●○●○●○●○●○●

ایسی غربت پر صبر کرنا

جس میں عزت محفوظ ہو

ایسی امیری سے بہتر ہے

جس میں ذلت اور رسوائی ہو

Asi gurbat par saber karana

jis mai izzat mahfi ho

Asi ameeri say bhatter ha

jis ma zilat o ruswayi ho

○●○●○●○●○●○●○●

‏بھوک پھرتی ہے میرے شہر میں ننگے پاٶں 

‏رزق ظالم کی تجوری میں چھپا بیٹھا ہے

Bhook phirti hai meray shahr mai nangay payaon rizq zalim ki tajori mai chopya betha hai

○●○●○●○●○●○●○●

کبھی کسی غریب کی ہنسی مت چھینئے 

اک زمانہ لگتا ہے ان کو مسکرانے میں

Kabhi kiisi gareeb ki hunsi maat cheniya

Ik zamana lagta hai in ko muskarany mai

○●○●○●○●○●○●○●

پیسہ پاس ہے تو انسان عقل مند اور خوبصورت دونوں ہو جاتا ہے 

Passah pass hai to insan aqaal maand or khubsurt dono ho jata hai ○●○●○●○●○●○●○●

تلاش رزق میں یہ شام اس طرح گزر گئی 

کوئی ہے اپنا منتظر خیال ہی نہیں رہا




Talash rizq mai ya sham is tarha guzar gayi

Koi ha apna muntazir khayal hi nae raha

○●○●○●○●○●○●○●

امیر آدمی غصہ کرتا ہے تو لوگ کہتے ہیں صاحب کا بی پی ہائی ہو گیا ہے 

جب غریب آدمی غصہ کرتا ہے تو لوگ کہتے ہیں اس کا دماغ خراب ہو گیا ہے 

Ameer admi gussa karta hai to loag khaty hn sahib ka bp high ho Gaya hai

Jab gareeb admi gussa karta hai to loag khaty hin is ka damag kharb ho gaya hai

○●○●○●○●○●○●○●

خاندانی اڑان میں آواز نہیں ہوتی 




تجھے دیکھ کے لگتا ہے یہ دولت نئی نئی ہے

Khandani oraan mai awaz nae hoti

Tujay deakh kay lagta hai ya dolat nai nai hai

○●○●○●○●○●○●○●

جب آپ کے پاس دولت ہو تو تکبر مت کرنا 

دولت تو ایک نہ ایک دن چلی جائگی مگر آپ کا رویہ یاد رہ جائگا

Jab ap kay pass dolat ho to taqabur mat karna

Dolat to aik na aik din chali jaya gi mager ap ka rawayia yad rah jaya ga

○●○●○●○●○●○●○●

‏غریب کی پینٹ پھٹی ہوئی ہو تو

غربت

امیر کی پینٹ پھٹ جائے تو فیشن




یہ کہاں کا انصاف ہے؟

Gareeb ki paint phati hoi ho to

Gurbat

Ameer ki paint phat jaya to fashion

Ya kahan ka insaff ha

○●○●○●○●○●○●○●

کسی غریب کو تنگ مت کرنا

تیری طاقت پیسہ ہے

اس کی طاقت اللّٰه ہے

Kisi gareeb ko tang mat karna

See also  Heart touching poetry

Tari taqat passah hai

Is ki taqat Allah hai

○●○●○●○●○●○●○●

اللہ سے اتنا ہی پیسہ مانگنۓ جتنے کی تمہیں ضرورت ہو کیونکہ اوقات سے زیادہ پیسہ بھی انسان کو گھمنڈ میں مبتلا کر دیتا ہے 

Allah say itna passah mango jitnay ki tumhay zarort ho kun kay oqar say zayda pasah bhi insan ko ghamand mai mubtalah kar deta ha

○●○●○●○●○●○●○●

شاعری لکھ رہا تھا غربت پر 

قلم ہی فروخت کرنا پڑ گیا مجھ

Shayri likh raha tha gurbat par

Qalam hi farokhat karna paar gaya muja

○●○●○●○●○●○●○●

شہرت کی بلندی کا تو اک پل کا بھروسہ نہیں ہے 

جس شاخ پے بیٹھے ہو وہ ٹوٹ بھی سکتی ہے 

Shohrat ki bulandi ka to ik pall ka bharosah nae hai

Jis shak pay bathay ho wo toot bhi skti hai

○●○●○●○●○●○●○●

دولت ایک ایسی تتلی ہے 

جسے پکڑتے پکڑتے

آدمی اپنوں سے دور نکل جاتا ہے

Dolat ak asi titli hai jesay pakarty pakarty admi apno say door nikal jata hai

○●○●○●○●○●○●

میری غربت نے اڑایا ہے میرے فن کا مذاق 

تیری دولت نے تیرے عیب چھپا رکھے ہیں

Mari gurbat ny oarya hi mery fun ka mazak

Tari dolat nay taray aib chupa rakhay hn

○●○●○●○●○●○●○●

آنسو بہا بہا کر بھی ہوتے نہیں کم

کتنی امیر ہوتی ہیں آنکھیں غریب کی

Anso baha baha kar bhi hoty nae kam

Kitni ameer hoti hain ankahyin gareeb ki

○●○●○●○●○●○●○●

میری زندگی کا تجربہ ہے کہ پیسہ بہت کچھ ہے 

لیکن پیسہ سب کچھ نہیں ہے

Mari zindgai ka tjurbah hai kay pasah buht kuch hai

Lakin passa sab kuch nae hai

○●○●○●○●○●○●○●

جانتا بھی ہے درزی یہ مفلسی کا لباس ہے 

پھر بھی میری قمیض پہ وہ جیب بنا دیتا ہے

Jitna bhia ha darzi ya muflasi ka labas

Phir bhi mari qameez pay wo jaib bana deta hai

○●○●○●○●○●○●○●

اگر تم وہ کرتے ہو جو ہمیشہ سے کرتے آرہے ہو 

تو تمہیں وہی ملے گا جو ہمیشہ سے ملتا آرہا ہے

Ager tum wo karaty ho jo hamisha say karty a rahay ho

To tumhay wohi milay ga jo hamisha say milta araha

○●○●○●○●○●○●○●

شاعری لکھ رہا تھا غربت پر 

قلم ہی فروخت کرنا پڑ گیا مجھے

Shayri likh raha tha gurbat par

Qalam hi farokhat karna paar gaya muja

○●○●○●○●○●○●○●

دولت محنت کرنے سے نہیں بلکہ عقل سے آتی 

ورنہ سر پہ پتھر اٹھانے والے مزدور سب سے زیادہ دولت مند بن جاتے

Dolat mahnat say nae balaky aqal say ati

Warna sir pay phater othany walay mazdoor sab say zayda Dolat maand ban jatay

○●○●○●○●○●○●○●

پیسے غرور کی اہم وجہ ہے اس سے لوگ دوسروں کو کم  تر سمجھتے ہیں

Pasay garor ki aham waja hai is sat loag dosron ko kam tar smjaty hn

○●○●○●○●○●○●○●

جس کے آنگن میں امیری کا شجر لگتا ہے 

ان کا ہر عیب زمانے کو ہنر لگتا ہے

Jis ky angan mai Ameeri ka shajar lagta hai

In ka har aib zamany ko hunar lagta ha

○●○●○●○●○●○●○●

کام کا آلس اور پیسے کا لالچ ہمیں ترقی کرنے نہیں دیتی.

Kaam ka Alass or pesay ka lalach taraqi nae deta

○●○●○●○●○●○●○●

اتنا قیمتی نہ کر خود کو کہ تو میری استطاعت سے باہر ہو جائے 

لوگ اکثر مہنگی چیز کو چھوڑ دیتے ہیں اپنی حیثیت دیکھ کر

Itna qimati  na kar khud ko kay to mari istitat say bahir hai

Loag aksar mahngi cheez ko chore detay han apni hasiyat deakh kar

○●○●○●○●○●○●○●

جو موت سے نہیں ڈرتا تھا بچوں سے ڈر گیا 

ایک رات خالی ہاتھ جب مزدور گھر گیا

Jo moat say nae tha darta bachon say daar gaya

Ak raat khali haat jab mazdoor gahr gaya

○●○●○●○●○●○●○●

دولت کی اصل خرابی یہ ہے کہ وہ آدمی کے پاس ہمیشہ نہیں رہتی اور اگر رہ جائے تو آدمی نہیں رہتا




Dolata ki asal kharabi ya ha ky wo admi kay paas hamisha nae rahti or ager rah b jaya to admi nae rahta

○●○●○●○●○●○●○●

جب دولت آنے پر کسی کا اخلاق تباہ ہوجائے 

تو سمجھ لو اس کے زوال کا وقت قریب آچکا ہے

Jab dolat anay par kiisi ka ikhlaq tabah ho jaya

To samaj lo is ky zawala ka waqat aa chuka ha

○●○●○●○●○●○●○●

میں نے ایک نوالے کیلئے جس کا شکار کیا 

وہ پرندہ بھی کہی روز سے بھوکا نکلا

Many ak nawalay ky liya jis ka shikae kiya

Wo parinda bhi kayi roaz say bhooka nikla○●○●○●○●○●○●○●

زمانہ کچھ نہیں بولتا سب پیسہ بولتا ہے 

پیسہ آنے کے بعد انسان نہیں انسان کا مزاج بولتا ہے

Zamna kuch nae bolta sab paisa bolta hai 

Paisa anay kay bad insan nae insan ka mezaj bolta hai

See also  Best urdu shayri

○●○●○●○●○●○●○●

کچھ لوگ دولت پکڑتے پکڑتے آپ سے بہت دور چلے جاتے ہیں

Kuch loag dolat pakarty pakarty ap say door chalay jatay hn

○●○●○●○●○●○●○●

دولت ایک ایسی تتلی ہے 

جسے پکڑتے پکڑتے آدمی اپنوں سے دور نکل جاتا ہے

Dolat ak asi titli hai jesay pakarty pakarty admi apno say door nikal jata hai

○●○●○●○●○●○●○●

میری جیب میں ذرا سا چھید کیا ہو گیا 

سکوں سے زیادہ رشتے سرک گئے

Mari jaib ma zara sa chaid kiya ho gaya

Sakoon say zayda ristay sarak gaya ○●○●○●○●○●○●○●

‏پہلے دولت کے انبار ڈھونڈتے ہیں

پھر زندگی میں قرار ڈھونڈتے ہی

Phlay dolat kay anbar dhoondaty hain.

Phir zindagi mai qarar dhoondaty hain ○●○●○●○●○●○●○●

ایسی غربت پر صبر کرنا جس میں عزت محفوظ ہو 

اس امیری سے بہتر ہے جس میں ذلت و رسوائی ہو 

Asi gurbat par saber karana jis mai izzat mahfi ho

Os ameeri say bhatter ha jis ma zilat o ruswayi ho

○●○●○●○●○●○●○●

آج کل صرف پیسے کی اہمیت ہے 

ہنر سڑکوں پر تماشا کرتا ہے

اور قسمت محلوں میں راج کرتی ہے

Aaj kal sirf passay ki ahmiyat hai

Hunar sarkon par tamasha karta hai

Or qismat mahlon mai raaj karti hai

○●○●○●○●○●○●○●

امیر کے گھر کا کوا بھی ہر کسی کو مور نظر آتا ہے




اور غریب کے گھر کا بچہ بھی ہر کسی کو چور نظر آتا ہے.

Ameer kay ghar ko kawa bhi har kiisi

ko moor nazar ata hai or gareeb kay

ghar ka bacha bhai hr kisi ko chore

 nazar ata hai

○●○●○●○●○●○●○●

اگر رزق عقل اور دانشوری سے ملتا تو جانور اور بے وقوف بھوکے مرجاتے

Ager rizq aqal or daniswari say milta

to janwar or bewaqoof bhooky maar

jaty

○●○●○●○●○●○●○●

میری غریبی نے اڑایا ہے میرے فن کا مزاق

تیری امیری نے تیرے عیب چھپا رکھے ہیں

Mari greebi ny oraya hai meray fun ka mazak

Tari ameeri nay taray aib chupa rahy hain

○●○●○●○●○●○●○●

غریب شہر تو فاقوں سے مر گیا

امیر شہر نے ہیرے سے خود کشی کر لی

Gareeb shahar to faqaon say marr gaya

Ameer shahar nay hiray say khud kushi kar li

○●○●○●○●○●○●○●

وفا کی خوشبو تو غریب سے آتی ہے

امیر کا تو عکس بھی بدل جاتا ہے

Wafa ki khushboo to gareeb say ati hai 

ameer ka to akas bhai badal jata hai

○●○●○●○●○●○●○●

کسی غریب کا کرتی نہیں ہے احترام

یہ دنیا لباس دیکھ کر سلام کرتی ہے

Kisi gareeb ka karti nae hai ihtiram

Ya duniya labas deakh kar salam karti ha

○●○●○●○●○●○●○●

مفلسی کے خنجر سے باپ مر ہی جاتا ہے

چوڑیوں کے لیے جب مچلتی ہیں بیٹیاں

Muflasi ky khanjar say baap maar hi jata hai

Choriyon kay liya jb machlti hain batiyan

○●○●○●○●○●○●○●

یہ جو تجھے جھک کر سلام کرتے ہیں 

یہ تیرے پیسے کا احترام کرتے ہیں

Ya jo tujay jhuk kar salamm kartay hain

Ya teray pasay ka ihtiram karaty hain

○●○●○●○●○●○●○●

ایسی غربت پر صبر کرنا جس میں عزت محفوظ ہو 

اس امیری سے بہتر ہے جس میں ذلت و رسوائی ہو 

Asi gurbat par saber karana jis mai izzat mahfi ho

Os ameeri say bhatter ha jis ma zilat o ruswayi ho

○●○●○●○●○●○●○●

آج کل صرف پیسے کی اہمیت ہے 

ہنر سڑکوں پر تماشا کرتا ہے

اور قسمت محلوں میں راج کرتی ہے

Aaj kal sirf passay ki ahmiyat hai

Hunar sarkon par tamasha karta hai

Or qismat mahlon mai raaj karti hai

○●○●○●○●○●○●○●

امیر کے گھر کا کوا بھی ہر کسی کو مور نظر آتا ہے

اور غریب کے گھر کا بچہ بھی ہر کسی کو چور نظر آتا ہے

Ameer kay ghar ko kawa bhi har kiisi ko moor nazar ata hai or gareeb kay ghar ka bacha bhai hr kisi ko chore

 nazar ata hai

○●○●○●○●○●○●○●

اگر رزق عقل اور دانشوری سے ملتا تو جانور اور بے وقوف بھوکے مرجاتے

Ager rizq aqal or daniswari say milta

to janwar or bewaqoof bhooky maar

jaty

○●○●○●○●○●○●○●

میری غریبی نے اڑایا ہے میرے فن کا مزاق

تیری امیری نے تیرے عیب چھپا رکھے ہیں

Mari greebi ny oraya hai meray fun ka mazak

Tari ameeri nay taray aib chupa rahy hain

○●○●○●○●○●○●○●

غریب شہر تو فاقوں سے مر گیا

امیر شہر نے ہیرے سے خود کشی کر لی

Gareeb shahar to faqaon say marr gaya

Ameer shahar nay hiray say khud kushi kar li

○●○●○●○●○●○●○●

وفا کی خوشبو تو غریب سے آتی ہے

امیر کا تو عکس بھی بدل جاتا ہے

Wafa ki khushboo to gareeb say ati hai

ameer ka to akas bhai badal jata hai

○●○●○●○●○●○●○●

Click to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.