Udas Poetry in Urdu

میں تو چپ ہوں کہ اندر سے بہت خالی ہوں 

اور کچھ لوگ پرسرار سمجھتے ہیں مجھے 

میں بدلتے ہوئے حالات میں ڈھل جاتی ہوں 

دیکھنے والے فنکار سمجھتے ہیں مجھے   

 

Main to chup hon kay andar say bohat khali hon

or kuch log pur israr samajhty hain

main badlay hovy halat main dhal jata hon

dakhnay walay Funkar samajhtay hain

………………….

اگر مگر اور کاش میں ہوں

میں خود بھی اپنی تلاش میں ہوں

 

Agar Magar or Kash main hon

Main khud be apni talash main hon

 

………………….

میری منتظر نگاہ کو تیری تلاش ہے

میں ہنس رہا ہوں پھر بھی دل اداس ہے

 

Mari muntazir nigah ko tari talash hay

main hans raha hin phir be dill udass hay

 

………………….

تتلی کے جیسی ہے میری ہر خواہش 

ہاتھ لگانے سے پہلے اڑ جاتی ہے

 

Tatlii kay jasi hay mari har khawush

hath lagany say pehlay urr jati hay

 

………………….

ﮐﻮﺋﯽ ﺗﻮ ﮨﮯ ﮐﮧ ﺟﺲ ﮐﯽ ﺧﺎﻃﺮ

ﺍﺩﺍﺱ ﺭہنے ﮐﺎ ﺷﻮﻕ ﺳﺎ ﮨﮯ

 

koi to hay kay jus ki khatir

udass rehny ka shoq saa hay

………………….

بتاؤں تمہیں اداس لوگوں کی نشانی وہ لوگ مسکراتے بہت ہیں

 

Bataon tumay udass logo ki nishani

wo lig muskuraty bohat hain

 

………………….

پڑ چکا ہے فرق اتنا 

کہ اب فرق ہی نہیں پڑتا

 

Par chuka ha farq itna

kay ab farq he nahi parta

 

………………….

کبھی کبھی یہ دل اداس ہوتا ہے 

ہلکا سا احساس ہوتا ہے

جھلکتے ہیں میرے بھی آنسوں 



جب آپ سے دور ہونے کا احساس ہوتا ہے

 

Kabi kabi ya dill udas hota ha

halka sa ehsas hota hay

jhalaktay hain maray be ansoo

jab ap say dour honay ka ehsas hota ha

💔💔💔

………………….

میں یہ ہنسنے والوں کے ساتھ ہنس تو رہا ہوں 

مگر اداسی میرے حلق تک بھری ہوئی ہے

 

Main ya hasnay walin kay sath hans to raha hon

Magar udasi maray halq tak bharii hoie hay

………………….

کاش کہ میں پلٹ جاؤں اسی بچپن کی وادی میں

جہاں نہ کوئی ضرورت تھی نہ کوئی ضروری تھا

 

Kash kay main palat jayon usi bachpan ki wadii main

jahan naa koi zaroort thii na koi zaroori tha

 

………………….

میرے چہرے سے ٹکراتے ہوئے سرد ہوا کے جھونکھے

اپنے ہونے سے زیادہ تمہارے نہ ہونے کا احساس دلاتے ہیں

 

Maray chahray say takratay hovay sard hawa kay jhonkay

apnay honay say zayada tumaray naa honay ka ehsas dilatay hain

 

………………….

جتنا زیادہ سوچو گے اتنی زیادہ اذیت میں رہو گے

یا تو اپنے آپ کو مضبوط کر لو یا مصروف کر لو

 

jitna zayda socho gay itnii zayada azeyat main raho gay💔

yaa to apnay aap ko mazboOot kar lo ya Masroof kar lo😊

 

………………….

میں یہ ہنسنے والوں کے ساتھ ہنس تو رہا ہوں 

مگر اداسی میرے حلق تک بھری ہوئی ہے

 

Main ya hansnay walaon kay sath habs to raha hon 🙂

Magar

Mari udasii maray halaq tak bharii hoie hay

 

………………….

تمہیں خیال نہیں کس طرح بتائیں تمہیں 

کہ سانس چلتی ہے لیکن اداس چلتی ہے

Tumain khayal nahi kis tarah batain tumay..!

kay Sans chaltii hay lakin udass chaltii ha…!💔

………………….

ایک بھی کام کی نہیں نکلی 

ہاتھ بھرا پڑا ہے لکیروں سے

 

aik be kam ki nahi niklii,,!

hath bhara para ha lakeeron say,,!🥀

 

………………….



میں ان پرندوں میں سے ہوں 

جو پنجرہ کھلا دیکھ اڑا نہیں کرتے

 

 

Main in parindon ma say hoon🕊

Jo Pinjara khula dakh uraa nahi karty

 

………………….

انسان کو اپنے بے بس ہونے کا احساس تب ہوتا ہے

جب وہ کسی کو دیکھنے کے لیے اس سے بات کرنے کے لیے ترس جاتا ہے


Insan ko apnay bay bass honay ka ehsas tab hota hay

Jab wo kisi ko dakhnay kay leya us say bat karny kay leya tarass jata hay

💔💔💯


………………….

اپنے اندر کے بچے کو ہمیشہ زندہ رکھیں

حد سے زیادہ سمجھداری زندگی کو بور کر دیتی ہے

 

Apnay andar ky bachpan ko hamasha zinda rakhain💕

had say zayda samajhdari zindagii ko bore kar dati ha💯

 

………………….

ﮨﺰﺍﺭﻭﮞ ﮨﯿﮟ یہاں ﻣﯿﺮﮮ ﻟﻔﻈﻮﮞ ﮐﮯ ﺩﯾﻮﺍنے

ﻣﯿﺮﯼ ﺧﺎﻣﻮﺷﯽ ﺳﻨﻨﮯ ﻭﺍﻻ ﮐﻮئی ﮨﻮﺗﺎ ﺗﻮ ﮐﯿﺎ ﺑﺎﺕ ﺗﮭﯽ


Hazaron hain yahan maray lafzon kay dewany💕

Marii khamoshii sun’nay wala koi hota to kya bat thii🔥

………………….

میں خود بھی تو ہوں اپنے آپ کے پیچھے پڑا ہوا 

میرا شمار بھی تو میرے دشمنوں میں ہے

Main khud be to hoon apnay aap kay peechay para hova

Mera Shumar be to maray dushmanoo ma hay🥀

 

………………….

تم تنہا رہنے کا سوچنا بھی مت 

تمھارا وقت ہوں ساتھ ساتھ چلوں گا

 

Tum tanha rehnay ka sochna be mat

Tumara waqt hoon sath sath chalon gaa

❤️❤️

………………….

ہم سے کیا پوچھتے ہو ہم کو کدھر جانا ہے 

ہم تو خوشبو ہیں بہرحال بکھر جانا ہے

 

Ham say kya pochtay ho ham ko kidar jana hay..!

Ham to khushbu hain bara hal bikhar jana hay..!

………………….

خواب تیرے ہی رہینگے ہمیشہ 

مجھے بھروسہ ہے اپنی آنکھوں پر

khawb taray he rahain gay hamasha😍

mujhay bharosa hay apni ankhon par💕😌

………………….



ساری باتیں دل کی ہوتی ہیں

اگر انسان کا دل ہی مر جائے 

تو لاکھ بہترین چیز عطا کردی جائیں 

لبوں پر مسکراہٹوں کے پھول نہیں کھلتے

 

Sari batain dill ki hoti hain

Agar insan ka dill he mar jay

too lakh behtreen cheez ataa kar di jayin

Labon par muskarahton kay phool nahi kheltay

 

………………….

جب مان ٹوٹ جائے 

تو انسان خاموش ہو جاتا ہے

پھر نہ تو کوئی گلہ کرنے کو دل کرتا ہے 

نہ کوئی شکوہ کرنے کو دل کرتا ہے

 

Jab maan toot jain

Too insan khamosh ho jata hay

Phir naa to koi gilaa karny ko dill karta hay

na koi Shikwa karny ko dill karta hay💯💯

………………….

جب مان ٹوٹ جائے 

تو انسان خاموش ہو جاتا ہے

پھر نہ تو کوئی گلہ کرنے کو دل کرتا ہے 

نہ کوئی شکوہ کرنے کو دل کرتا ہے


Jab maan toot jain

Too insan khamosh ho jata hay

Phir naa to koi gilaa karny ko dill karta hay

na koi Shikwa karny ko dill karta hay💯💯


………………….

خود سے ناراض زمانے سے خفا رہتے ہیں

جانے کیا سوچ کے ہم سب سے جدا رہتے ہیں

 

khud say naraz zamany say khafa rehtay hain 

janay kya soch kay ham sab say Judaa rehtay hain 


………………….

وہ لڑکی تنکا تنکا بکھر گئی

جسے مان تھا اپنے صبر پر

 

Wo larkii tinka tinka bikhar gai

jisay maan tha apnay sabar par

 

………………….

ہم لکھ نہیں پاتے اب اپنے الفاظ

لوگوں نے اندر سے بہت جلا دیا ہے

 

Ham lakh nahi patay ab apnay alfaz

logo nay andar say bohat jala deya ha

 

………………….

حالات نے چہرے کی چمک چھین لی ورنہ

دو چار برس میں یوں بڑھاپے نہیں آتے


Halat nay chahray ki chamak cheen lii

warna doo char bars main yoon barhapay nahi aatay

 

………………….

عمروں نے کی ہے کیلنڈروں سے چھیڑ خانی 

وہ کھیلنے والا اتوار اب فکروں میں گزر جاتا ہے

 

Umaron nay ki hay  Qalander say chair khanii

wo khalnay wala Itwar ab fikron ma guzar jata hay


………………….

مایوسی ایک دھوپ ہے جو سخت سے سخت وجود کو بھی جلا کر راکھ کر دیتی ہے

 

Mayosii aik dhoop hay jo sakht say sakht wajood ko bee jala kar rakhh kar datii hay…! 🔥💔💔

………………….

میں وہ لکھتے ہوئے بہت رویا

تم جسے پڑھ کے مسکرائے ہو

 

Main wo likhtay hovay bohat royaa

Tum jisay  parh kar muskuray hoo🥀

………………….

تمہاری سب اناؤں کے بھرم تم کو مبارک ہوں 

تمہارے بعد ہم ہر فکر سے آزاد بیٹھے ہیں

 

Tumari sab anaoy kay bharam tum ko Mubarak hon

Tumaray bad ham har fikar say Azad bathay hain

………………….

 ‏آنکھیں خالی رکھ لیں گے ہم 

سارے خواب جلا ڈالیں گے

 

Ankhain khalii rakha lain gay ham

Saray khawab jala dalain gain

………………….

یہ کیفیت بھی اچھی ہے

کہنے کو بہت کچھ ہے کہنا کچھ بھی نہیں

 

Ya kafiyat be achi hay

kehnay ko be kuch hay kehna kuch be nahi

………………….

کوئی آیت پڑھ کے بھیج اِدھر

میری آنکھیں نیند سے خالی ہیں

 

Koi ayat parah kay bhaj idar

Mari ankhain neend say khali hain

………………….

کہاں ہے زندہ لاشوں کا قبرستان 

مجھے خود کی تدفین کرنی ہے

 

Kahan hay zinda lashon ka Qabarstan

Mujhay khud ki tadfeen karni hay

………………….

میری خواہشات تو کب کی مر گئ ہیں 

اب کچھ ذمداریوں نے زندہ رکھا ہوا ہے

 

Mari khawishshat to kab ki mar gai hain

Ab kuch zimaydariyon nay zinda rakha hova hay

 

………………….



میری خوشیاں تمہیں بہت عزیز تھی نا 

جب ہی انہیں بھی اپنے ساتھ لے گئے ہو

 

Mari khushyan tumay bohat azeez thi naaw💕

jab he inay be apnay sath lay gayy ho💔

………………….

ان سے بچھڑ کر کچھ یوں وقت گزرا 

کبھی زندگی کو ترسے کبھی موت کو پکارا

 

Un say bichar kar kuch yun waqt guzara

kabi zibdagi ko tarsy kabi moat ko pukara🖤

 

………………….

میری اداسیاں تمہیں کیسے نظر آئینگی 

تمہیں دیکھ کر تو ہم مسکرانے لگتے ہیں

 

Mari udasiyn tumay kasay nazar aagn gii

tumay dakh kar to ham muskurany lagtay hain😊

 

………………….

ہماری مثال ان پھولوں جیسی ہے 

جو کھلتے ہی نہیں مرجھانے کے خوف سے

 

Hamari masal in phoolon jasi hay💔

Jo kheltay he nahi mujhanay kay khoof say🥀

………………….

کبھی کبھی انسان نا ٹوٹا ہے 

نا بکھرتا ہے بس تھک سا جاتا ہے

کبھی خود سے کبھی قسمت سے 

اور کبھی اپنوں سے


kabi kabi insan na toot’ta hay

Na bikhrata hay bas thak saa jata hay

kabi khud say kabi kismat say

Or kabi apno say….!💔

 

………………….

نہ کھول میرے مکان کے اداس دروازے 

ہوا کا شور میری الجھنیں بڑھا دیگا 

 

Na khool maray makan kay udass darwazy ..’🚪

Hawa ka shoor mari Uljanahin barha day gaa..’ 💔


………………….

ﭼﮍﯾﻮﮞ ﮐﯽ ﻃﺮﺡ ﮨﻢ ﺑﮭﯽ ﺷﺠﺮ ﭼﮭﻮﮌ ﺟﺎﺋﯿﮟ ﮔﮯ

ﺗﺮﺳﯿﮟ ﮔﮯ ﻟﻮﮒ ﭘﮭﺮ ﮨﻤﺎﺭﮮ ﺷﻮﺭ ﮐﻮ

 

Chriyon ki tarah ham be shajar chor jain gayin 

Tarsain gay log phir hamaray shor ko

………………….

اداس رہنے کا مجھے کوئی شوق نہیں 



بس تیرے ساتھ بتائیں ہوئے پل میں بھول نہیں پاتا


Udass rehny ka mujhy koi shoq nahi

bass taray sath betain hovy pal main bhool nahi pata💔💔

 

………………….

وہ اتفاق سے راستے میں مل جائے کہیں 

بس اسی شوق نے ہمیں آوارا بنا دیا

 

Wo itfaq say rastay main mil jay kahin

Bass isii shoq nay hamay awara bana deya..,🥀

 

………………….

چہرے پر خوشی کی کوئی انتہا ہی نہیں

اور زخموں کو دلوں میں چھپائے بیٹھے ہیں

 

Chehray par khushi ki koi Inteha he nahi**_

or zakhmon ko dilon main chupay bathay hain**_

………………….

اداس رہنے کا مجھے کوئی شوق نہیں 

بس تیرے ساتھ بتائیں ہوئے پل میں بھول نہیں پاتا

 

Udass rehnay ka mujhay koi shoq nahi

Bass

Taray sath betain hovay pal main bhool nahi pata

………………….

چہرے پر خوشی کی کوئی انتہا ہی نہیں

اور زخموں کو دلوں میں چھپائے بیٹھے ہیں

 

Chehray par khushi ki koi inteha he nahi

Or Zakhmon ko dilon ma chupay bathay hain

 

………………….

میں آخر کون سا موسم تمہارے نام کر دیتا؟ 

یہاں ہر ایک موسم کو گزر جانے کی جلدی تھی

 

Main Aakhir kon sa mosam tumray nam kar deya ?

Yahan har ak mosam ko guzar janay ki jhaldi thii

 

………………….

ہونٹوں کی ہنسی کو نہ سمجھ حقیقت زندگی 

دل میں اتر کے دیکھ کتنے ٹوٹے ہوئے ہیں ہم

Honton ki hansi ko naa samjh haqeqat zindagi

Dill ma utar kay dakh kitnay tootay hovay hain ham

 

………………….

آ پھر سے رو برو کہ آئے مجھے قرار 

اب کے اداس یوں ہوں کہ جینا محال ہے

 

Aa Phir say rubaru kay Ayn mujhay qarar

Ab kay udass yun hon kay jeena muhal hay💔


………………….

وہ پوچھے جو میری اداسی کا سبب 

میں اداس رہنا چھوڑ دوں گی

 

Wo pochay jo mari udasi ka sabab

Ma udass rehna chorr don gi

………………….

آؤ آنکھیں ملا کے دیکھتے ہیں 

کون کتنا اداس رہتا ہے

 

Aayo Ankhain mila kay dakhtay hain

kon kitna udass rehta hay

 

………………….

کون جھانکے گا میری روح کی گہرائی ‏میں 

‏کون دیکھے گا میرے جسم میں ٹوٹا ‏کیا ہے

 

Kon jhanakay gaa mari rooh ki gehrai ma

kon dakhay gaa maray jism ma toota kya hay

………………….

میری آنکھوں میں چھپی اداسی کو محسوس تو کر 

See also  Tu shayar hai

میں سب کو ہنسا کر خود رات بھر نہیں سوتا

 

Mari ankhon ma chupii udasi ko mehsoos to kar

Ma sab ko hansa kar khud rat bhar nahi sotaa

 

………………….

زیادہ بولنے والے زیادہ ہنسنے والے اور زیادہ رونے والے 

دل کے بہت صاف اور اندر سے بہت اکیلے ہوتے ہیں 

 

Zayda bolany walay zayada hansnay walay or zayada ronay walay

Dil kay bohat saaf or andar say bohat aklay hotay hain

 

………………….

پرانی تصویریں دیکھتے ہوئے اکثر مسکراہٹ

اور کبھی کبھی آنکھوں میں نمی سی آجاتی ہے


Purani Tasweerin dakhtay hovay aksar muskurahat

Or kabi kabi ankhon ma nami si aa jati hay

………………….

وہ جو غم سن کر بھی ہنستے اور ہنساتے تھے 

ان یاروں کو ڈھونڈ لا آج دل اداس ہے بہت

 

Wo jo Gham sun kar be hanstay or hansatay thay..’!

In yaron ko dhond laa aj dill udass hay bohat..’!

 

………………….

ہائے وہ پوچھ بیٹھے ہیں سبب اداسی کا 

خدارا ہمیں تو بہانے بنانا بھی نہیں آتے

 

Hayee.! Wo poch bathay hain sabab udasi ka

Khudara hamay to bahany banany be nahi aatay

 

………………….

تلاش میں بیت گئی ساری زندگی؟ 

اب پتہ چلا کہ خود سے بڑا کوئی ہمسفر نہیں؟

 

Talash may beet gain sari Zindagi

Ab pata Chala kay khud say bara koi hamsafar nahi

 

………………….

کل آئینوں کے شہر میں گم ہوگئی تھی میں 



چہرے کو اپنے ڈھونڈ کر لانا پڑا مجھے

 

kal Ainayon kay sehar ma gum ho gai thi ma

Chehray ko apnay dhond kar lana para mujhay

………………….

ہو سکے تو دور ہی رہو مجھ سے

ٹوٹا ہوا ہوں کہیں چبھ نہ جاؤں


Ho sakay to dour hi raho mujh say

toota hova hoon kahi chub naa joyn

………………….

اداکاری بڑا دکھ دے رہی ہے 

ہم سچ مچ مسکرانا چاہتے ہیں

 

Adakarii bara dukh day rahi hay

Ham sach much muskurana chahtay hain

………………….

خوبصورت سا وه اک پل تھا

پر وه میرا کل تھا


Khoobsurat  saa wo ak pal tha

Par wo mera kal tha

………………….

زندگی کا سب سے بڑا المیہ یہ ہے کہ 

شوق کی عمر میں صبر سیکھ لیا جاۓ 

 

Zindagi ka sab say bara Almiya ya hay kay

Shoq ki umar ma sabar seekh leya jay

 

………………….

لگی جو چوٹ تو خیال آیا

کہاں گئے میرا صدقہ اتارنے والے

 

Lagi jo choot to khayal aaya

kahan gayn mera Sadqa utarnay walay

 

………………….

کچھ لوگ سفر کے لئے موضوع نہیں ہوتے

کچھ سفر اکیلے بھی نہیں کٹتے اسے کہنا

 

Kuch loog safar kay leya mozuh nahi hotay

kuch safar aklay be nahi  kat’tay usay kehna

………………….

اچھی لگتی ہے مجھے اس کی بس یہی عادت

اداس کر کے مجھے خود بھی خوش نہیں رہتی


Achi lagti hay mujhy us ki bass yahi adat

udass kar kay mujhy khud be khush nahi rehti

 

………………….

جو ذرا کسی نے چھیڑا تو چھلک پڑیں گے آنسو 

کوئی مجھ سے یہ نہ پوچھے میرا دل اداس کیوں ہے


Jo zara kisi nay chaira to jhalak parain gay Ansoo

Koi mujh say ya naa pochay mera dill udass kuy hay

………………….

خود سے بھی روٹھ گیا ہوں 

کہ اب اتنا ٹوٹ گیا ہوں

 

khud say be rooth gaya hoon

kay ab itna toot gaya hoon

 

………………….

پہلے خواہشات پوری کرنے کے لیے ضد کیا کرتے تھے 

اب ضرورتوں کا بھی اظہار نہیں کرتے

 

pehlay khawishat puri karny kay keya zid kya karty thay

ab Zaroraton ka be izhar nahi karty

………………….

ﻣﯿﺮﮮ ﺧﻮﺍﺑﻮﮞ ﮐﯽ ﺑﺴﺘﯽ ﺳﮯ ﺟﻨﺎﺯﮮ ﺭﻭﺯ ﺍﭨﮭﺘﮯ ہیں 

ﻣﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ ﺟﺴﮯ ﭼﮭﻮ ﻟﯿﮟ ﻭﮦ ﺳﭙﻨﺎ ﻣﺮ ﮨﯽ ﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ

 

maray khawabon ki basti say janazay roz uthtay hain

mari ankhain jisa chuu lain wo sapna mar hi jata hay

………………….

مسکراتا ہوں تو اندر ہی مر جاتا ہوں 

کیا سمجھتے ہیں لوگ بہت خوش رہتا ہوں

 

Muskurata hoon to andar hi mar jata hoon

kya samjhtay hain log bohat khush rehta hoon

 

………………….

کالی رات کی تنہائی دل کو سکون دیتی ہے

دل نہیں لگتا اب میرا روشن دن کی محفلوں میں

 

Kalii rat tanhai dill ko sakoon dati hay

dill nahi lagta ab nera rishan din ki mehfilon main

 

………………….

کسی کی معصوم ہنسی کے پیچھے درد کو محسوس تو کرو

سنا ہے ہنس ہنس کے لوگ خود کو سزا دیتے ہیں

kisi ki masoom hansii kay peechay dard ko mehsoos to karo

suna hay hans hans kay log khud ko saza datay hain

 

………………….

وہ ہمیں خود ہی اداس کرکے چلا گیا 

جس نے قسم دی تھی ہمیں خوش رکھنے کی

 

Wo hamain khud he udass kar kay chala gaya

jis nay qasam di thi hamain khush rakhnay kii

 

………………….

حسرتوں کے دفن کا سامان ہونا چاہئیے 

دل کے ایک کونے میں قبرستان ہونا چاہئیے 


Hasraton kay  dafan ka saman hona cheya

dill kay aik konay main Qabarstan hona cheya

 

………………….

بن بات کے ہی روٹھنے کی عادت ہے

کسی اپنے کا ساتھ پانے کی چاہت ہے

آپ خوش رہیں میرا کیا ہے 

میں تو آئینہ ہوں مجھے ٹوٹ جانے کی عادت ہے

Bin bat kay hi ruthany ki adat hay

kusi apnay ka sath panay ki chahat hay

ab khush rahain mera kya hay

main to ayna hoon mujhu toot jany ki adat hay💔💔

………………….

کاش میں لوٹ جاؤں بچپن کی وادی میں 



نہ کوئی ضرورت تھا نہ کوئی ضرورت تھی

 Kasy main lout jayon bachpan ki wadii ma

naa koi zaroori tha naa koi zaroort thii

 

……………….

آنکھ سے کھینچ کر نکالے ہیں

خواب ویسے بھی مرنے والے تھے

 

Ankh say khench kar nikaly hain

khawab wasay be marany walay thay

 

………………….

کبھی کبھی ہمیں کسی دوا کی ضرورت نہیں ہوتی 

بلکہ کسی کے الفاظ کی ضرورت ہوتی یے

kabi kabi hamay kisi dawa ki zaroort nahi hoti

balkay

kisi kay alfaz ki zaroort hoti hay

………………….

کوئی دیکھے گا نہیں کتنا خلا ہے دل میں

لوگ ہنستا ہوا دیکھیں گے چلے جائیں گے

koi dakhay gaa nahu kitna khala hay dill ma

log hansta hova dakhain gay chaly jain gain

………………….

ویرانی میرے اندر کی لگتا ہے یوں جائے گی 

کلمہ پڑھا جائے گا دل کی دھڑکن رک جائے گی

Warani maray andar ki lagta hay yon jay gii

Kalma Parha jay ga dill ki dharkan ruk jay gii

 

………………….

ذمہ داریوں کے ہجوم میں

جو چیز سب سے پہلے گم ہوتی ہے

وہ بس اپنی شخصیت ہوتی ہے

 

zimaydariyon ki hajoom main

jo cheez sab say pehlay gum hoti hay

wo bas apni sakhsiyat hoti hay

 

………………….

کبھی کبھی پتھر کے ٹکرانے سے آتی نہیں خراش

کبھی اک ذرا سی بات سے بھی انسان بکھر جاتا ہے

 

kabi kabi pathar kay takrany say aati nahi kharas

kabi ak zara sii bat say be insan bikhar jata hay

 

………………….

میں اب خدا کو سناتا ہوں اپنا حال دل

میں اب زمین والوں پر بھروسہ نہیں کرتا

 

Ma ab Khuda ko sunata hoon apna haal e Dill

Ma ab zameen walon par bharosa nahi karty

 

………………….

‏ﻭﮦ ﺟﻮ ﺗﻠﺦ ﺑﺎﺗﻮﮞ ﭘﮧ ﻗﮩﻘﮩﮯ ﻟﮕﺎﺗﺎ ﮨﮯ

ﺳﺎﺭﮮ ﺁﻧﺴﻮ ﮨﯽ ﺭﻭ ﭼﮑﺎ ﮨﻮ ﮔﺎ

 

Wo jo talkh baton pay kehkay lagata hay

saray ansoo he reh chuka ho gaa

………………….

 کتنا نادان ہے وہ مجھ سے پوچھتا میری اداسی کا سبب

مجھے اداس کر کے بھی خود بھی اداس رہتا ہے

 

kitna nadan hay wo mujh say pochta mari udasi ka sabab

mujhay udass kar kay be khud be udass rehta hay

 

………………….

ہر روز دل اداس ہوتا ہے اور شام گزر جاتی ہے 

ایک روز شام اداس ہوگی اور ہم گزر جائینگے

Har roz dill udass hota hay or shaam guzar jati hay

ak roz shaam udass ho gi or ham guzar jain gay

 

………………….

تھی اس قدر عجیب مسافت کہ کچھ نہ پوچھ

آنکھیں ابھی سفر میں تھیں اور خواب تھک گئے

Thi is qadar ajeeb masafat kay kuch na poch

ankhain abi safar main thin or khawab thak gay

 

………………….

نظر انداز کرتے ہو تو لو ہٹ جاتے ہیں نظروں سے

ان ہی نظروں سے ڈھونڈو گے نظر جب ہم نہ آئیں گے

 

Nazar andar karty ho to lo hat jatay hain nazron say

un he nazron say dhondo gay nazar jab ham na aayn gain

………………….

ہوا کچھ نہیں بس

وہ چپ ہے میں اداس ہوں

 

Hova kuch nahi bass

wo chup kay ma udass hon

 

………………….

میں سب کو ہنسنانے والا لڑکا 

جب خدا سے اپنی باتیں کرتا ہوں تو رو پڑتا ہوں 


Masab ko hansany wala larka

jab Khuda say apni batain karta hoon to roo parta hon

 

………………….

دیکھنے میں تو سب خوش نظر آتے ہیں 

مگر دلوں کا حال صرف اللہ جانتا ہے 

dakhnay ma to sab khush nazar aatay hain

Magar dillon ka hal sirf Allah janta hay

 

………………….

میری خاموشی سے تم ناراض مت ہوا کرو

حالات سے ہارے ہوئے لوگ اکثر خاموش رہتے ہیں

 

Mari khamoshii say tum naraz mat hova karo

halat say haray hovay lig aksar khamosh rehtay hain

………………….

مسکرائیے دنیا کے سارے دکھ آپ کی مالکیت تھوڑی ہیں

Muskurain duniya kay saray dukh aap ki malkiyat thori hain

 

………………….

مسکراہٹ تبسم ہنسی قہقہے سب کے سب کھو گئے ہم بڑے ہو گئے

Muskurahat Tabasum hansii kehkay sab kay sab khoo gay

ham baray ho gay

………………….

زندگی مشکل تب لگتی ہے

 جب کہنے کو بہت کچھ ہو

 اور انسان کچھ نہ کہہ پائے

Zindagii muskil tab lagti hay

jab kehny ko bohat kuch ho

or insan kuch na keh pay

 

………………….

میرا کیا حال ہے تیرے بنا کبھی دیکھ تو لے



جی رہا ہوں تیرا بھولا ہوا وعدہ بن کر 

 

 

Mera kya hal hay taray bina kabi dakh to lay

jii raha hoon tera bhoola hova wada ban kar

………………….

آج کل وہ بہت خوش مجھے اداس دیکھ کر 

اس کے خوشی دیکھ کر میں خوش ہو جاتا ہوں 

Aj kal wo bohat khush mujhy udass dakh kar

us kay khushi dakh kar main khush ho jata hoon

………………….

تم پرندے کا دکھ نہیں سمجھے 

پیڑ پر گھونسلا نہیں گھر تھا 

Tum parinday ka dukh nahi samjhtay

pair par ghonsala nahi ghar tha

………………….

یہ ہمدردیاں اب مجھے کاٹتی ہے

یوں خوامخواح مزاج نا پوچھا کرے کوئی 

ya hamdardiyan ab mujhu katti hay

youn khamkhaa mejiz naa pocha karay koi

………………….

چاہنے والوں کی تو زندگی میں کوئی کمی نہ تھی

چاہا جس کو بھی ہم نے وہ ہمارا نہ ہوا

chahnay walon ki to zindagi ma koi kami naa thii

chaha jis ko be ham nay wo hamara na hova

………………….

آنکھیں کھلی تو جاگ اٹھی حسرتیں تمام

اس کو بھی کھو دیا جس کو پایا تھا خواب میں 

Ankhain khuli to jhag uthi hasratin tamam

us ko be kha deya jis ko paya tha khawab ma

………………….

ﮐﮭﻮ ﺟﺎﺅ ﺗﻮ ﻭﯾﺮﺍﻥ ﺳﯽ ﮨﻮ ﺟﺎﺗﯽ ﮨﮯ ﺭﺍﮨﯿﮟ 

ﻣﻞ ﺟﺎﺅ ﺗﻮ ﭘﮭﺮ ﺟﯿﻨﮯ ﮐﺎ ﺍﺣﺴﺎﺱ ﺑﮭﯽ ﺗﻢ ﮨﻮ

khoo joy to weran si ho jati hay rahain

mil joy too phir jeenay ka ehsas be tum ho

………………….

تیری غفلتوں کو خبر کہاں 

میری اداسیاں ہیں عروج پر

Tari ghaflaton ko khabar kahan

mari udasiyn hain arooj par

………………….

مجھ سے پوچھے نہ کوئی میری اداسی کا سبب

لگا کے سینے سے مجھے کاش رلا دے کوئی

mujh say poochay na koi mari udasi ka sabab

laga kay seenay say mujhay kash rula day koi

………………….

جب تم کسی کی آنکھوں میں نمی اور لبوں پہ ہنسی دیکھوں 

تو سمجھ لینا وہ شخص اندر سے بہت گہرا ٹوٹا ہے

Jab tum kisi ki ankhon ma nami or labon pay hansi dakhon

Too samjh lena wo sakhs andar say bohat gehra toota hay

………………….

کیسے تحریر کر پاؤنگا آج احوال اپنا

لفظ افسردہ سے ذہن الجھا سا اور لہجہ بیزار سا

kasay tehreer kar payon ga aj ahwal apna

lafz afsurda say zehan uljha saa or lehjaa bayzar saa

………………….

نہیں ہم کو شکایت اب کسی سے بس اپنے آپ سے روٹھے ہوئے ہیں

بظاہر خوش ہیں لیکن سچ بتائیں ہم اندر سے بہت ٹوٹے ہوئے ہیں

Nahi ham ko shikayat ab kisi say bass apnay aap say ruthay hovay hain

bazahir khush hain lakin sach batain ham andar say bohat tootay hovay hain

 

………………….

تمہیں تو لاکھ تک آتی ہے گنتی

کروڑوں خامیاں ہیں مجھ میں

tumay to lakh tak aati hay gentii

karorr khamiya hain mujh ma

………………….

ڈھیر باتیں ہیں ڈھیر شکوے ہیں

خود سے کرتا ہوں خود سے لڑتا ہوں.

See also  Life poetry in urdu

 

Dhairr batain hain dhairr shikway hain

khud say karta hon khud say larta hon

………………….

چلی گئی تو لوٹ کر نہیں آونگی

اس قدر نہ ستاو بہت اداس ہوں آج کل

 

Chalii gai to lout kar nahi aayon gii

is qadar naa satoyy bohat udas hon ajkal

………………….

روح میں کوئی غم ہے پوشیدہ

زندگی بے سبب اداس نہیں

 

Rooh ma koi zakhm hay posheda

Zindagii bay sabab udass hay

………………….

بچپن میں جہاں چاہے ہنس لیتے تھے 

جہاں چاہے رولیتے تھے

اب ہنسنے کیلئے تمیز چاہیے

اور رونے کیلئے تنہائی 

 

Bachpan ma jahan chahy hans latay thay

jahan chahay roo latay thay

Ab hansy kay keya Tameez cheya

or ronay kay keya Tanhaii

 

………………….

یہ تیرا ظلم ہے یا تقدیر کا ستم 

کیسے کہیں کتنے اداس ہیں ہم

Ya tera Zulm hay ya taqdeer ka sitam

kasay kahain kitny udass hain ham

………………….

نیند آتی تھی جس کو تیرے سو جانے سے 

سوچ ذرا کیسے سویا ہو گا تیرے دور جانے سے

 

Neend aati thi jus ko taray soo jany say

soch zara kasay soya ho gaa taray dour janay say

………………….

حالات میرے مجھ سے نہ معلوم کیجئے

مدت ہوئی ہے مجھ سے میرا واسطہ نہیں




Halat  maray mujh say na maloom Kejeya

Mudat hoie hay mujh say mara wasta nahi

 

………………….

ہوا کے ساتھ اُڑ گیا گھر پرندوں کا

کیسے بنا تھا گھونسلہ یہ طوفان کیا جانے

 

 

Hawa kay sath urr gaya ghar parindon ka

kasay bana tha ghonslaa ya thofan kya janay

………………….

عجیب بے بسی کا موسم ہے دل کے آنگن میں 

ترس گئے ہیں تیرے ساتھ گفتگو کے لئے

 

Ajeeb bay basii ka mosa hay dill ka angan ma

tars gay taray sath ghuftaguu kay leya

………………….

اجنبی راستہ انجان منزل ہے

کڑی دھوپ ہے کوئی سایہ نہیں ہے

Ajnabii rasta anjan munzil hay karii dhoop hay koi saya nahi hay

 

………………….

گمان ہے تیرے لوٹ آنے کا 

دیکھ کتنا بدگمان ہوں میں.

 

Ghuman hay tera lot aanay ka dakh kitna badguman hon ma

………………….

اب کوئی آئے چلا جائے میں خوش رہتا ہوں 

اب کسی شخص کی عادت نہیں ہوتی مجھ کو


Ab koi aayn chala jay ma khush rehta hon

ab kusi sakhs ki adat nahi hoti mujh ko

………………….

میں تمہیں ڈھونڈنے یادوں کی کھلی راہوں پر

خشک پتوں کی طرح روز بکھر جاتا ہوں

 

ma tumay dhondnay yadaon ki khulii rahon parr

khushk paton ki tarah roz bikhar jata hon

………………….

وہ دور بیت گیا جب تیرے بغیر ہمیں 

تمام شہر کے رستے اداس لگتے تھے

 

wo doour beet gaya jab taray begir hamain

tamam sehar kay rasty udass lagtay thay

………………….

‏نازک مزاج کے لوگ ہیں ہم 

باتوں سے ہی ٹوٹ جاتے ہیں

 

Nazak mejaz kay log hain ham

baton say hee toot jatay hain

………………….

 وقت کی روانی بدل دیتی ہے زندگی کے سبھی رنگ 

کوئی چاہ کر خود کے لئے اداسیاں نہیں خریدتا

 

waqt ki rawanii badal dati ha zindagi kay sabi rang

koi chaa kar khud kay leya udasiyan nahi kharedata

 

………………….

میں وہ تصویر ہوں جس کو مصور 

ادھورا چھوڑ کے خود رو پڑا

 

ma wo tasweer hoon jis ko Musawer

udhera chor kay khud roo para

………………….

گزر رہی ہے بے لطف سی زندگی 

نا دل لگی میں مزہ نا دل لگانے میں

 

Guzar rahi hay bay luft sii zindagii

naa dill lagi ma maza na dill lagany maa

………………….

میری آنکھوں کو دیکھ کر ایک صاحب علم بولا 

تیری سنجیدگی بتاتی ہے تجھے ہنسنے کا شوق تھا

 

mari ankhon ko dakh kar aik Sahib ilm bola

tari sanjedgii batati hay tujhay hansna ka shok tha

………………….

نہ دل سے آہ نہ لب سے صدا نکلتی ہے 

مگر یہ بات بڑی دور جا نکلتی ہے 

 

Naa dill say aaah naa lab say sada nikaltii hay

magar ya bat bari door jaa niklii ha

………………….

جس کو خوش رہنے کے سامان میسر سب ہوں 

اس کو خوش رہنا بھی آۓ یہ ضروری تو نہیں

 Jis ko khush rahny ka saman mayasar sab hoo

is ko khush rehny be aayn ya zaroori to nahi

………………….

تم پوچھتے ہی نہیں پریشانی کی وجہ 

کچھ اس وجہ سے بھی پریشان ہوں میں

 Tum pochtay he nahi parshanii ki wajaa

kuch is waja say be parshan hon ma

………………….

یہاں اداس ہے ہر ایک شخص 

کوئی اندر سے کوئی باہر سے

 

Yahan udass hay har sakhs

koi andar say koi bahir say

………………….

کتنی ویران سی رہ جاتی ہے دل کی بستی 

کتنے چپ چاپ سے چلے جاتے ہیں جانے والے

kitnii weran si rah jati ha dill ki bastii kitnay chup chapp say chaly hatay hain jany walay

 

………………….

اداسیاں ہیں مگر وجہ غم معلوم نہیں 

دل پہ بوجھ سا ہے شاید بکھر گیا ہوں میں 

Udasiyan hain magar  waja gham maloom nahi

dill pay bojh saa hay shyad bikhar gaya hoon ma

………………….

دفن ہیں مجھ میں کتنی رونقیں مت پوچھو

اجڑ اجڑ کر جو بستا رہا وہ شہر ہوں میں

Dafan hain mujh ma kitnii ronakain mat pochoo

ujar ujar kar jo basta raha wo sehar hoon ma

………………….

میں سب کو ہنسانے والی لڑکی 

جب خدا سے اپنی باتیں کرتی ہوں

تو رو پڑتی ہوں

ma sab ko hansana wali larkii

jab khuda say apni batain karti hon too roo parti hon

………………….

اداس زندگی اداس وقت اداس موسم

کتنی چیزوں پہ الزام لگ جاتے ہیں 

ایک اس کے بات نہ کرنے سے

udass zindagi udass waqt udass mosam

kitnii cheezon pay ilzam lag jatay hain

aik is bat kay bat na karnat say

………………….

مجھ سے ملنے لگے ہو جب سے 

الجھنیں بڑھنے لگی ہیں تب سے

 

mujh say milnay lagay ho jab say

uljanay bharnay lagi hain tab say

 

………………….

ویرانیاں اندر کی 

اک قلب جانے اک رب جانے

Weraniyan andar ki

aik qalab jany ak Rab janay

………………….

ہنسنا تو مجبوری بن گئی ہے

صاحب

اداس ہوں گے تو لوگ سمجھیں گے

محبت میں ہار گئے ہیں

Hansna to majborii ban gai hay

Sahibb

udass hoon gay to log samjhay gay

Mohabat ma har gayy Hainn

………………….

کوئی تدبیر کرو وقت کو روکو یارو 

صبح دیکھی ہی نہیں شام ہوئی جاتی ہے

Koi tadbeer karo waqt ko roko

Yarooo

subaa dakhi he nahi sham hoie jati ha

………………….

چبھتی ہے قلب و جاں میں ستاروں کی روشنی 

اے چاند ڈوب جا کہ طبیعت اداس ہے

 

chubii hay qalab e jan ma sitaron ki roshaniii

aay chand doob ja kay tabeyat udass hay

………………….

اداس دیکھ کے  وجہ ملال  پوچھے گا

وہ مہرباں نہیں ایسا کہ حال پوچھے گا

Udas dakh kay waja malal pochay gaa

wo meharban nahi asay kay haal pichay gaa

………………….

ایک معصوم سی خواہش سفید جوڑا چار کاندھے اور مسکراتے ہوئے لوگ 

 

aik masoom sii khawish safeed jora char khanday or muskuraty hovay log

………………….

میرا ظرف سمجھو یا میری ذات کا پردہ 

جب سے ٹوٹی ہوں خاموش رہتی ہوں

 

mera zarf samjhoo ya mari zaat ka parda

jab say tooti hon khamosh rahti hon

………………….

ان کی آنکھوں میں نظر آتا ہے سارا جہاں مجھ کو 

افسوس کہ ان آنکھوں میں کبھی خود کو نہیں دیکھا 

in ki ankhon ma nazar aata ha sara jahan mujh ko

afsos kau in ankhon ma kabi khud ko nahi dakha

………………….

کچھ پانے کی چاہ نہیں

کھو نے کو کچھ رہا نہیں

kuch panay ki chaa nahi

khonay ko kuch raha nahi

………………….

باتیں تو بہت سی ہیں مگر 

دیواروں کے منہ کیا لگنا.

 

Batain to bohat sii hain magar

dewaron kay muh kya lagnaa

………………….

اندھیرے سے کہہ دو کہ بچپن بیت چکا ہے 

اب تجھ سے ڈر نہیں سکون ملتا ہے.

Andharay say keh doo kay bachpan beet chuka hay

ab tujh say darr nahi sakoon milta ha

………………….

ہنستا میں روز ہوں

پر خوش ہوئے اک زمانہ ہو گیا

 

Hansta ma rooz hoon

par khush hovay ak zamana hoo gaya

………………….

میری آنکھوں کو نہ دے آدھی ادھوری بخششیں

یا خواب واپس چھین لے یا خواب کی تعبیر بھیج.


mari ankhon ko naa day aakhi adhori  bakhsish

yaa khawab wapiss cheen lay ya khawab ki tabeer bhajj

 

………………….

چھین لی میری مسکراہٹیں میرے اپنوں نے 

ورنہ رونق تو میں بھی بڑی کمال کی لگاتا تھا.

 

cheen li mari muskurahatin maray apno nay

warna

ronak to ma be bari kamal ki lagata tha

………………….

آنکھوں کی عدت ابھی پوری نہیں ہوتی 

کہ اک اور خواب کفن اوڑھ لیتا ہے

 

Ankhon ki edatt abi purii nahi hoti

kay al or khwab kafan oorh leta hay

………………….

چل آ تجھے دیکھا دوں اپنے دل کی ویران گلیاں 

شاید تجھے ترس آجاۓ میری اداس زندگی پر

 Chal aa tujhay dakhaa don apnay dil ki weran galiyan

shyad tujhay tarss aa jay mari udas zindagi par

………………….

ہوا کہ دوش پہ رکھے ہوئے چراغ تھے ہم

جو بجھ گئے تو ہواؤں سے شکایت کیسی

Hawa kay dosh oay rakhy hovy charag thay ham

jo boojh gay to hawaon say sikayat kasi

………………….

خلوص میں لبوں پر مٹھاس رہنے دو 

نہ خود اداس رہو نہ کسی کو اداس رہنے دو

Khaloos ma labo par methas rehny do

naa khud udass raho na kisi ko udass rehny do

………………….

خواب آنکھوں میں سجائے ہوۓ ہم معصوم سے لوگ

زندہ رہنے کی تمناوں میں مر جاتے ہیں

khawab ankhon ma sajay hovay ham masoom say log

zinda rehny ma tamanoy ma mar jatay hain

………………….

چل آ تجھے دیکھا دوں اپنے دل کی ویران گلیاں 

شاید تجھے ترس آجاۓ میری اداس زندگی پر

chal aa tujhy dekha don apnay dill ki weran galiyn

shyad tujhay tarsss aa jay mari udass zindagi par

………………….

خواب آنکھوں میں سجائے ہوۓ ہم معصوم سے لوگ

زندہ رہنے کی تمناوں میں مر جاتے ہیں

khawab ankhon ma sajay hovay ham masoom say log

zinda rehny ma tamanoy ma mar jatay hain

………………….

مسکراہٹیں جھوٹی بھی ہوا کرتی ہیں 

انسان کو دیکھنا نہیں سمجھنا سیکھو

Muskurahatain jhooti be hova karti hain

insan ko dakhna nahi samjhna seekho

………………….

آئینہ وہ واحد ساتھی ہے جو آپ کے ہنسنے پے ہنستا ہے اور آپ کے رونے پے روتا ہے 

Ainaa wo wahid sathi hay jo ap kay hansnay pay

hansta hay or apa kay ronay pay rota hay

………………….

حالات کر دیتے ہیں بھٹکنے پر مجبور

گھر سے نکلا ہوا ہر شخص آوارہ نہیں ہوتا

Halat kar datay hain bathkny par majboor

ghar say nikla hova har sakhs awara nahi hota

………………….

تم ساتھ ہوتے یہ شہر حسین لگتا 

اب شام نہیں ڈھلتی اب دل نہیں لگتا 

tum sath hotay ya sehar haseen lagta

ab sham nahi dhaltii abdil nahi lagta

………………….

بن تیرے باخدا نہیں آتا 

لفظ جس کو قرار کہتے ہیں

bin taray baa khuda nahi aata

lafz jis ko qarar kehtay hain

………………….

مانا کہ ہم ہیں اجڑے ہوئے شہر کی مثال 

آنکھیں بتا رہی ہیں ویران تم بھی ہو

mana kay ham hain ujhrayvhovy seharr ki misal

Ankhainn bata rahi hain weran tum be ho

………………….

شکستہ دل ہوں مگر مسکرا کے ملتی ہوں 

اگر یہ فن ہے تو سیکھا ہے ایک عذاب کے بعد

sakasta dil hon magar muskura kay mikti hon

agar ya fan hay to seekha hay ak azab kay bad

………………….

میری خوشی کے لمحے مختصر ہیں اس قدر 

گزر جاتے ہیں میرے مسکرانے سے پہلے

mari khushi kay lamhay mukhtasir hain is qadar

guzar jatay hain maray muskurany say pehlay

………………….

کچھ اپنوں نے ہمیں اداس کر دیا 

ورنہ لوگ ہم سے مسکرانے کا راز پوچھا کرتے تھے 

kuch apno nay hamain udass kar deya

warna log ham say muskurany ka razz pocha karty thay

………………….

کوئی نہیں جان سکتا کہ مسکراتا ہوا شخص 

اپنے ہی اندر کتنی جنگیں لڑ رہا ہوتا ہے

koi nahi jan sakta kay muskurata hova sakhs

apnay he andar kitnii jhangain lar raha hota hon

………………….

ہر سمت میٹھے پانی کے چشمے تھے اور ہم 

اک شخص کی تلاش میں صحرا کو چل دیے

har simat meethay pani kay chasmay thay or ham

ak sakhs ki talash ma sehra ko chal deyan

………………….

ہم نے چہرے پے مسکراہٹ لا کے 

آئینوں کو ہمیشہ گمراہ رکھا ہے

ham nay chehray pay muskuraht laa kay

aaino ko hamasha ghumra rakha hay

………………….

میں کھوکھلی ہنسی ہنسنے کی کوشش کرو گی 

اداسیوں تم بھی میرا ساتھ دینے

may khokhali hansii hansnay ki koshish karon gi

udasiyon tum be mera sath dena

………………….

اے زندگی مجھے کچھ مسکراہٹ ادھار دے 

عید آنے والی ہے مجھے کچھ رسمیں نبھانی ہے

See also  Birthday wishes in urdu

aay zindagi mujhu kuch muskurahat udhar day

Eid aanay walu ha mujhy kuch rasmain nabhani hay

………………….

بعض اوقات تو ہم حد کر دیتے ہیں 

خود کو دیکھتے ہیں اور رد کردیتے ہیں

bazz okat to ham har kar datay hain

khud ko dakhtay hain or rad kar datay hain

………………….

‏اندر کوئی جهانکے تو ٹکڑوں میں ملوں گا 

‏ہنستا هوا چہرا تو زمانے کے لیے ہے

anadr koi jhankay to tokron ma milon gaa

hansta hova chehra to zamany kay keya hay

………………….

میں بے ساختہ خود بخود ہنس دیتا ہوں

اس قدر بے دردی سے رولایا اس نے

ma bay sakhta khud ba khud hans deta hon

is qadar bay dardii say rolaya us nay

………………….

ساری زندگی اداس رہنا ہے 

سوچتا ہوں تو مسکراتا ہوں

sari zindagi udass rehna hay

sochta hon to muskurata hon

………………….

تمہارے پاس تو پھر بھی تم ہو 

میرے پاس تو میں بھی نہیں.

Tumaray pass to phir be tum ho

maray pass to ma b nahi

………………….

باتیں اگر بول دی جائے تو رشتے مر جاتے ہیں 

اور اگر دل میں رکهی جائے تو انسان مر جاتا ہے.

batain agar bol di jain to rishtay mar jatay hain

or agar dill ma rakhi jay to insan mar jata hay

………………….

بظاہر تو بڑی رنگین ہے آنکھ کی دنیا 

ویرانی اندر کی ایک قلب جانے ایک رب جانے

ba zahir to bari rangeen hay ankh ki duniya

werani andr ki ak qalab jany ak Rab jany

………………….

مسکراتے ہوئے پھولوں کی نزاکت پہ نہ جا



کوئی اندر سے پریشان بھی ہو سکتا ہے

muskuratay hovy pholon ki nazakat pay na jaa

koi andar say parshan be ho sakta hay

………………….

باتیں اگر بول دی جائے تو رشتے مر جاتے ہیں 

اور اگر دل میں رکهی جائے تو انسان مر جاتا ہے

batain agar bol di jain to rishtay mar jatay hain

or agar dill ma rakhi jay to insan mar jata hay

………………….

اکیلے تڑپتا رہا اس تنہائی بھری رات میں 

نہ تم آئی نہ نیند آئی نہ چین آیا نہ موت آئی

aklay tarpata raha is tanhai bhari rat  ma

na tum aaie na neend aaie ma chain aya na moat aaie

………………….

کیسے رہائی ملے؟ ذات کے زندان میں

اس نے کیا قید بھی خود مرے اندر مجھے

kasay rahai milay? Zat kay zindan ma

is nay keya qaid be khud maray andar mujhay

………………….

اب تو بہت خشک ہے موسم بارش ہو تو سوچیں گے

ہم نے ارمانوں کو کسی مٹی میں بونا ہے 

ab to bohat khushk hay mosam barish ho to sochain gayy

ham nay armano ko kisi matti ma bona hay

………………….

خود کلامی عجیب ہوتی ہے

خود سے باتیں اور آپ کی باتیں

khud kalami ajeeb hoti hay

khud batain or ap ki batain

………………….

صبح کے اجالے میں دل ڈھونڈتا ہے تعبیریں

دل کو کون سمجھائے خواب خواب ہی ہوتا ہے

shuba kay ujhaly ma dill dhondta hay tabeerin

dil ko kon samjhay khawab khawab he hota hay

………………….

ہم آسماں سر پہ اٹھانے والے

خاموش رہنے لگے ہیں دیکھو

ham asma ssarvpay uthana waky

khamish rehny lagy hain dakho

………………….

درد کتنا ہی کیوں نہ ہو ہم مسکرانا نہ چھوڑیں گے 

اداسیوں سے کہو ٹھکانا بدل لیں اپنا

dard kitna he kuy na ho ham muskurana na chorain gay

udasiyon say kaho thekana badal lain apna

………………….

اگر شوق سے ڈھونڈو گے تو مل جائیں گے تم کو 

ہم ریت میں کھوئے ہوئے سکے کی طرح ہیں

agar shoq say dhondo gay to mil jay gain tum ko

ham rait ma khoy hovay sakay ki tarah hain

………………….

غموں کی دھوپ میں مسکرا کے چلنا پڑتا ہے 

یہ دنیا ہے یہاں چہرا سجا کے چلنا پڑتا ہے 

ghamo ki dhoop ma muskura kay chalna parta ha

ya duniya hay yahan chehra saja kay chalna parta ha

………………….

وہ شرارتیں وہی شوخیاں میرے عہد طفل کے قہقہے

کہیں کھو گئے میرے رات دن اسی بات کا تو ملال ہے

wo shararatin wohi sokhiynvmaray ehad tofal kay kehkay

kahi khoo gay maray rat di isi bat ka to malal hay

………………….

‏وہ جب آئے گا دیکھے گا تو مجھ سے پوچھے گا 

یہ کس کا ہجر ہے یہ کون کھا گیا تم کو 

wo jab aayn ga dakhy ga to mujh say pochay ga

ya kis ka hijar hay ya lon khaa gaya tum ko

………………….

آج پھر اس کی یاد میں دل اداس ہے 

لگتا ہے میرے بن وہ بھی اداس ہے

Aj phir us ki yad ma dill udass hay

lagta hay mera bin wo be udass hay

………………….

تم سے دور جانے کا ارادہ نہ تھا

ساتھ رہنے کا بھی وعدہ نہ تھا

تم یاد نہ کرو گے جانتے تھے ہم

اتنی جلدی بھول جاو گے اندازہ نہ تھا

tum say dour jany ka irada na tha

sath rehnay ka be wada naa tha

tum yad na karo gay jantay thay ham

itnii jhaldiii bhool joy gay andaza na tha

………………….

میں آئینہ ہوں دکھاؤں گا داغ چہرے کے

جسے خراب لگے وہ سامنے سے ہٹ جائے

ma aina hon dakhon ga dagh cehray kay

jusay kharab lagy wo samnay say hat jay

………………….

طبیعت سے خاموش ہو چکا ہوں 

میں پتا نہیں کہاں کھو چکا ہوں



Tabeyat say khamosh ho chuka hon

ma pata nahi kahan khoo chuka hon

………………….

سلگ رہا ہوں کئی دن سے اپنے ہی اندر میں

اب جو لب کھو لوں گا تو بہت تماشا ہوگا

salaq raha hon kai din say apnay he andar ma

ab ma jo lab kholu ga to bohat tamasha ho ga

………………….

بڑے مشکل دور سے گزرا ہوگا وہ شخص 

جو رونے والی بات پر بھی مسکرا دیتا ہے.

baray muskil door say guzra ho ga wo sakhs

jo ronay wali bat par be muskura deta hay

………………….

ایک فائدہ تو تھا تم سے بات کرنے کا 

میں تھوڑی دیر سہی پر دل سے مسکراتی تھی

aik faida to tha tum say bat karny ka

ma thori dair sahi par dill say muskuratii thi

………………….

چلو کہ آج بچپن کا کوئی کھیل کھیلیں 

بڑی مدت ہوئی بے وجہ ہنس کر نہیں دیکھا

chali kay aj bachpan ka koi khaik khalain

bari mudat hoie bay waja hans kar nahi dakha

………………….

روشن کیے ہوۓ ہیں تیری یاد کے چراغ 

آجا تیرے بغیر طبیعت اداس ہے

roshan keyan hovay hain tari yad kay charag

aa ja taray begir tabeyat udass hay

………………….

کاش وہ آ جاۓ اور لڑ کر یہ کہے

 ہم مر گئے ہیں کیا جو اتنا اداس رہتے ہو

kash wo aa jay or larr kay ya kehy

ham marvgay hain kya jo itna udass rehtay ho

………………….

تیری جستجو تیرا خیال تیری ہی آس ہے

آ دیکھ تو سہی تیرے بغیر کتنا اداس ہے

tari gistagu tara khyal tari he aas hay

aaa dakh to sahi taray begir kitna udass hay

………………….

تیرے بعد اداسی میری روح میں جذب ہو گئی 

پھر رونقیں مجھے زہر لگنے لگی

taray bad udasi mari rooh ma jazab ho gai

phr ronakain mujhy zahar lagnau lagi

………………….

آسیب زده گھر کا وه درد ہوں میں

دیمک کی طرح کھا گئی جسے دستک کی تمنا

asaib zada ghar ka wo dard hon ma

demak ki tarh khaa gai jisay dastak ki tamana

………………….

پرچھائیوں کے ﺷﮩﺮ کی ﺗﻨﮩﺎئیاں نہ پوچھ 

ﺍﭘﻨﺎ شریک ﻏـﻢ کوئی ﺍﭘﻨـــﮯ ﺳﻮﺍ نہ تھـا

Parchayon kay sehar ki tanhai na poch

apna sareek gham koi apnay sawa na thaa

………………….

وہ جو گھٹ گھٹ کے مر رہا ہے 

وہ میں نہیں سایہ ہے میرا

Wo jo khut khut kay mar raha hay

Wo ma nahi saya hay mera

………………….

مجھ کو خود میں جگہ نہیں ملتی 

تو ہے موجود اس قدر مجھ میں

mujh ko khud ma jhaga nahi miltii

to hay majood is qadar mujh ma

………………….

‏ہم نے چہرے پر اطمینان سجا کر 

آئینے کو ہمیشہ گمراہ ہی رکھا

ham nay chehray par etminan saja kar

ainnay ko hamasha ghumra he rakha ha

………………….

گزر جائے گا یہ دور بھی ذرا اطمینان تو رکھ 

خوشی ہی نہ ٹھہری تو غم کی کیا اوقات ہے

guzar jay ga ya dour b zara etmenan to rakh

khushi he na tehrii to gham ki kya okat hay

………………….

اب میں کسی کو برا نہیں کہتا

جو کچھ جی میں آتا ہے خود کو سنا دیتا ہوں



ab ma kidi ko bura nahi kehta

jo kuch jii ma ata hay khud b suna deta hon

………………….

ہنستا تو میں روز ہوں 

پر خوش ہوئے زمانہ ہو گیا

hansta to ma roz hon

par khush hovay zamana ho gaya

………………….

ایک مدت کے بعد مسکرا ئے تو خیال آیا 

کبھی ہم یوں بھی اچھے لگتے تھے

ak mudat kay bad muskuray to khyal aya

kabi ham yon be achy lagtay thay

………………….

چوٹ پے چوٹ کھاتا جا رہا ہوں

زخموں کو دل میں چھپتا جا رہا ہوں

خود کو میں دھوکہ میں رکھا کر لوگوں

 کہ سامنے مسکراتا جا رہا ہوں.

chot pay chot khata jaa raha hon

zakhmonko dill ma chupata ja raha hon

khud ko ma dhokha ma rakh kar logo

kay samnay muskurata jaa raha hon

………………….

‏ایسی منہ زور اداسی ہے میرے کمرے میں

‏جو تیری یاد کا تختہ بھی الٹ سکتی ہے

‏ضبط بھی اپنی جگہ ہے مگر اے خاموشی 

‏اتنا مت چیخ کہ شریان بھی پھٹ سکتی ہے

asi muh roz udasi hay maray kamray ma

jo tari yad ka takhta be ulat sakti hay

zabat be apni jhaga hay magar ayy khamoshii

itna mat cheekh k saryan be phat sakti hay

………………….

میری زندگی بھی اس قبرستان کی طرح ہے 

جہاں لوگ تو بہت ہیں مگر اپنا کوئی نہیں

mari zindagi be is Qabarstan ki tarah hay

jahan log to bohat hain magar apna koi nahi

………………….

جب جب رونے کو من ہوا میرا

تب تب جی بھر کے مسکرایا ہوں میں

jab jab ronay ko man hova mera

tab tab jii bhar kay muskuraya hon ma

………………….

مسکرانے کے زمانے گزر گے صاحب 

کچھ لوگ دفنا گئے 

میرے شوق بھی 

میرے ذوق بھی

muskurany kay zamany guzar gay sahib

kuch log dafna gay

maray shoq be

maray zoq be

………………….

مجھ کو منائے کون 

خود سے خفا ہوں میں 

mujh ko manay kon

khud say khafa hon ma

………………….

ادھورے پن کی اذیت بجا سہی لیکن

میں آئینے میں مکمل دکھائی دیتا ہوں

Adhoray pan ki azyet baja sahi lakin

ma ainay ma mukambal dekhai deta hon

………………….

کب سے اپنی تصویر نہیں بنائی 

عرصہ ہوا خود کو اچھے نہیں لگے ہم

kab say apni tasweer nahi banai

arsa hova khud ko achy nahi lagy ham

………………….

کیا زمانہ تھا وہ بھی 

مرتے تھے 

ہم جینے کے لئے

اب جی رہے ہیں مرنے کے لئے

kya zamana tha wo be

martay thay

ham jeenay kay leya

ab jee rahy hain marny kay leya

………………….

ہمدردیاں جناب مجھے کاٹتی ہیں اب 

یوں خوامخواہ مزاج نہ پوچھا کرے کوئی

Hamdardiyn janab mujhy katti hain ab

yon kham khaa mejaz na pocha karay koi

………………….

مجھ میں احساس جگاتی ہے اداسی میری 

دل ویراں مجھے ظالم نہیں ہونے دیتے

mujh ma ehsas jagati hay udasi mari

dill weran mujhy zulam nahi honay datay

………………….

ہم چپکے سے دبے پاوں 

تیری کہانی سے نکل جائیں گے

ham chupkay say dabay paon

tari kahani say nikal jain gayin

………………….

‏نجانے کون سی گلیوں میں چھوڑ آیا ہوں 

چراغ جلتے ہوئے خواب مسکراتے ہوئے

anjan kon si galiyon ma chor aya hon charag jhaltay hovay khawab muskuraty hovay

………………….

‏نجانے کون سی گلیوں میں چھوڑ آیا ہوں 

چراغ جلتے ہوئے خواب مسکراتے ہوئے



Anjan kon si galiyon ma chor aya hon Charag jhaltay hovay khawab muskuraty hovay 

………………….

تم تو نگاہیں پھیر کر خوشیوں میں کھو گۓ 

ہم نے اداسیوں کو اپنا مقدر بنا لیا ہے

Tum to nighahain phair kar khushyon ma kho gay

ham nay udasiyon ko apna muqadar bana leya hay

………………….

کچھ دنوں سے بڑا پریشان ہوں میں 

خود کے لیے بھی انجان ہوں میں 

دن رات خاموش رہتا ہوں 

کبھی کبھی لگتا ہے قبرستان ہوں میں


kuch dino say bara parshan hon ma

khud kay leya be anjan hon ma

din rat khamosh rehta hon

kabi kabi lagta hay qubarsatan hon ma

………………….

ترس گئی ہیں یہ آنکھیں تیرے دیدار کی خاطر 

اک بار تو آجاؤ ان کے سکوں کی خاطر 

Taras gai hain ankhain taray dedar ki khatir

Ak bar to aa joy  in kay sakoon ki khatir